طیب اردوان ایک واقعہ بیان کرتے ہیں، اپنے والد سے انہوں نے پوچھا کہ ہم عثمانی ترک ہیں یا کسی اور قبیلے کے؟ والد نے کہا: یہ سوال میں نے اپنے باپ سے پوچھا تھا

دعا ہے سو جاری رکھنی چاہئیے، صدقہ ہے، اللہ کی بارگاہ میں جو اپنے رفتگاں کی نذر کیا جا سکتاہے۔ جانے ملاقات کب ہوگی؟ طلوعِ مہر، شگفتِ سحر، سیاہی ء شب تری طلب، تجھے پانے کی آرزو،ترا غم عصرِ رواں کے عارف نے کہا تھا: آدمی کی اکثریت ایسی ہے کہ جیسی پیدا ہو، ویسی مزید پڑھیں