جامعہ کراچی میں من پسند نوکریوں کے لئے دباؤ، مالی، انتظامی معاملات میں اندرونی و بیرونی مداخلت، سلیکشن بورڈ میں من پسند بھرتیوں کےلئے پریشر – پروفیسر ڈاکٹر اجمل خان شدید ذہنی دباؤ میں مبتلا

پروفیسرڈاکٹراجمل خان شدیدذہنی دباؤمیں مبتلا تھے،ذرائع کےمطابق جامعہ کراچی میں من پسند نوکریوں کےلئےدباؤ،مالی اورانتظامی معاملات میں اندرونی وبیرونی مداخلت سمیت سیلیکشن بورڈمیں من پسند بھرتیوں کےلئے بھی مختلف افرادکی جانب سےپریشردیاجارہاتھا. تعلیمی ذرائع کےمطابق سندھ یونیورسٹی آف جامشوروکےوائس چانسلرفتح برفت کی جانب سےاپنےخاندان کےلوگوں کوجامعہ کراچی میں میرٹ کےبرخلاف تعیناتیاں کرانااورانتظامی معاملات میں مداخلت کرنامعمول تھا، جامعہ کراچی میں حالیہ انجمن اساتذہ کےاحتجاج،مطالبات کی منظوری سمیت درجنوں مسائل شامل ہیں،تدریسی اورغیرتدریسی شعبوں کی جانب سےاکثرکئےجانے والےاحتجاج جس میں مطالبات شامل تھےان کےلئےایک بڑاچیلنج تھا،گذشتہ کئی دنوں سےسوشل میڈیاپرجامعہ کراچی کےاساتذہ پرطالبات کوحراساں کرنےکی خبریں گردش کررہی تھیں،


شعبہ ابلاغ عامہ کےاستادوں پرطالبات کوحراساں کرنےکےالزامات،سوشل میڈیاپرجنگل کی آگ کی طرح پھیل چکےتھے،ان تمام معاملات پرانکوائری تشکیل دی گئی جسکی حتمی رپورٹ وائس چانسلرکوپیش کی جانی تھی، جبکہ جامعہ کراچی انتظامیہ کی جانب سےتمام معاملات کی تردیدکی گئی،اورکہاگیاکہ کسی بھی طلبہ  نےاساتذہ کےخلاف کوئی درخواست جمع نہیں کرائی،دوسری جانب جامعہ سندھ کےوائس چانسلرفتح برفت بھی اپنےمن مانےفیصلےجامعہ کراچی سےمنظور کرانے کےلئےاپنااثرورسوخ استعمال کررہےتھے.

اپنا تبصرہ بھیجیں