حکومت کی موٴثر پالیسی کی وجہ سے سندھ صوبے میں دہشت گردی کے واقعات میں نمایاں کمی آئی ہے، وزیر اعلیٰ سندھ

وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی صدارت میں یونائیٹڈ نیشن (یو این او ڈی سی) کے ڈرگ اور کرائم اور برٹش ہائی کمشنر اسلام آباد کے وفد سے ملاقات، یو این وفد میں کرمنل جسٹس ایڈوائیزر مس جوہائڈا ہانانو،نیاز صدیقی، پروسیکیوشن اینڈ جڈیشری مینجر سید وقاص، رول آف لا پروگرام کے مینجر غلام علی، برٹش ہائی کمشنرسے رول آف لا کی ہیڈ سوسن لاگہیڈ اور رول آف لا کی مینجر ارم زہرہ، سندھ حکومت سے ایڈووکیٹ جنرل سلمان تاجدین، آئی جی پولیس کلیم امام، پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو اور سیکریٹری داخلہ قاضی کبیر شریک تھے، اجلاس میں سندھ میں رول آف لا کے روڈ میپ پر تبادلہ خیال، رول آف روڈ میپ کا مقصد عوام کا کرمنل جسٹس سسٹم میں اعتماد قائم کرنا. حکومت کی موئثر پالیسی کی وجہ سے سندھ صوبے میں دہشتگردی کے واقعات میں نمایاں کمی آئی ہے.


سندھ میں اغوا برائے تاوان، بھتاخوری اور ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں بھی نمایاں کمی آئی ہے. سندھ پولیس کے بجٹ میں بھی کافی اضافہ کیا گیا ہے انویسٹی گیشن کے لئے بھی بجٹ میں 6.5 فیصد اضافہ ہوا ہے. سندھ حکومت نے پولیس کے لئے اسکول آف انویسٹی گیسن اینڈ انٹلی جنس قائم کیا ہے جس میں اب تک 900 پولیس اہلکاروں کو تربیت دی جا چکی ہے.جیل خانہ جات میں بھی اچھی اصلاحات لائے گئے ہیں، سندھ میں قانون کی حکمرانی کے لئے دیگر صوبوں کے نسبت بہتریں قانون سازی کی گئی ہے۔ اس قانون سازی میں سندھ میرج رسٹرینٹ ایکٹ 2013، ڈومیسٹک وائیلنس (پری وینشن اینڈ پروٹیکشن) ایکٹ 2013 اور وٹنس پروٹیکشن ایکٹ 2013 قابل ذکر ہیں، ہم چائلڈ پروٹیکشن یونٹ بھی قائم کر رہے ہیں: وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ



اپنا تبصرہ بھیجیں