تین کروڑ کی آبادی کے شہر میں صرف تین پبلک لائبریریاں ہیں، ہمیں زمین کی نشاندہی کی جائے تو شہر میں مزید لائبریریاں قائم کرنے کے لئے تیار ہیں ۔ سید سردار شاہ

کراچی – سندھ کے وزیر تعلیم و ثقافت سید سردار شاہ نے کہا ہے کہ کراچی میں لائبریریوں کی تعداد انتہائی کم ہے تین کروڑ کی آبادی کے شہر میں صرف تین پبلک لائبریریاں ہیں ہمیں زمین کی نشاندہی کی جائے تو شہر میں مزید لائبریریاں قائم کرنے کے لئے تیار ہیں۔ وہ جمعہ کو سندھ اسمبلی میں وقفہ سولات کے دوران ارکان کے تحریری و ضمنی سوالات کے جوابات دے رہے تھے ارکان نے وزیر ثقافت کے اعلان کا خیر مقدم کیا۔ وزیر ثقافت نے بتایا کہ صوبے میں 23 لائبرریاں ہیں خیرپور میں چار لائبریریاں صوبے میں ہر تعلقہ پر لائبریریاں قائم کرنا چاہتے ہیں جہاں کلچر کمپلیکس بنائے وہاں لائبریری بھی قائم کی گئی ہیں تاریخ، ثقافت، امتحانات و انٹری ٹیسٹ کی کتب بھی رکھی ہیں لاڑکانہ کی لائبریری میں ڈھائی ہزار بچے روز آتے ہیں کبھی تو پانچ ہزار سے زائد طلبہ پڑھنے آتے ہیں جگہ کم ہوجاتی ہے لائبریریوں میں گرلز، انٹرنیٹ، وزیٹرز اور سی ایس ایس کتب کے علاوہ کمپیوٹر سمیت دیگر شعبے ہیں لاڑکانہ ریجن میں میرپورخاص میں زیادہ سہولیات ہیں مگر بچوں کی آمد کم ہے بنسبت اپر سندھ میں بڑی تعداد میں طلباء لائیبریریز آتے ہیں۔ پی ٹی آئی کی ڈاکٹر سیما ضیاء نے تجویز دی کہ صوبے میں سائنس اینڈ ٹیکنالوجی لائبریری بھی قائم کی جانی چاہیییں۔


سردار شاہ کا کہنا تھا کہ لاڑکانہ کی سر شاہنواز بھٹو لائبریری میں آنے والوں کی غیر معمولی تعداد ہوتی ہے صبح آٹھ بجے لائبریری کھلتی ہے تو طلباء قطاروں میں کھڑے ہوتے ہیں یومیہ پانچ ہزار افراد اس لائبریری میں آتے ہیں اور نشستیں کم پڑ جاتی ہیں اس صورتحال کو مد نظر رکھتے ہوئے حکومت نے سر شاہنواز بھٹو لائبریری کی جگہ کو وسیع کرنے کا فیصلہ کیا ہے انہوں نے شکوہ کیا کہ میرپورخاص میں ایک بڑی ائیر کنڈیشنڈ پبلک لائبریری موجود ہے لیکن وہاں مطالعہ کے لئے لوگ بہت کم آتے ہیں عوام کو اس لائبریری سے استفادہ کرنا چاہئیے۔صوبائی وزیر نے کہا کہ ہوٹل میٹروپول محفوظ ورثہ 1994 ایکٹ کے تحت محفوظ ہے مالک کی جانب سے اسے محفوظ نہ کرنے لاپرواہی پر کیا اقدام کیا گیا ہے. 1994 سندھ ہیریٹیج ایکٹ میں ترامیم کی ضرورت ہے کچھ کی ہیں اس ضمن میں کمیٹی چیف سیکریٹری کے اختیار میں آزاد کمیٹی ہے ان لسٹ اور ڈی لسٹ کے اختیار کے تحت فیصلے کیئے جاتے ہیں. اس وقت چار ہزار سے زائد عمارتیں محفوظ ورثہ ہیں کوئی اربوں کی ملکیت ہو اور مالک سزا اور جرمانہ بھرکر ایسے کام کرتے ہیں اسپیکر نے کہا کہ ہیریٹیج دنیا کا قانون ہے یورپ میں بھی قانون ہیں جن کی اندر کا کام مالک اور باہر سرکار کرتی ہے صوبائی وزیر نے بتایا کہ یہ تاریخی عماتوں کے فنڈز ہمارے پاس میسر نہیں دنیا میں اس طرح کے انڈوومنٹ فنڈس ہوتے ہیں ہمارے پاس بھی ہونے چاہیئیں کوئی نجی عمارت مالک توڑے تو سزا ایک لاکھ اور تین سال سزا ہے میٹروپول کی عمارت کے مالک نے آپ سے کوئی رابطہ کیا ہے۔


یہ عمارت 2011 میں ڈکلیئر کی گئی مجھ سے رابطہ کرنے کی انکو ضرورت نہیں مالک عدالت میں گئے تھے نصرت سحر عباسی نے کہا کہ عدالت نے 2017 میں ری سروے کا حکم چھ ماہ کی مدت دی اب نئی نوٹیفائی لسٹ جلد پبلش کریں گے وہ کمیٹی ہے تو کیا وزیر بے اختیار ہیں اور عمارتیں گرتی رہیں گیں خیرپور کا فیض محل بھی تباہ ہوتا جارہا ہے صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ میٹروپول کا تعین شہنشاہ ایران کی آمد عالمی کانفرنس وہاں ہوئی تھیں اس طرح کے اسباب طعے کیا جا تا ہے برنس روڈ ہلاکت کا علم نہیں البتہ فنانشل سپورٹ یا فنڈ نہیں یہ عمارات اسکیم سے نہیں بنائی جاسکتی ہیں ثقافت صوبے میں بھی ہے اور وفاق کا بھی ہے اگر وہ بڑہ چڑہ کر حصہ لینا چاہیئے بات میٹروپول سے کھارادر تک پنہچی مگر سندھ کا چپہ چپہ تاریخی ہے جناح صاحب کی رہائش کی مرمت مسلسل کی جاتی ہے میں نہیں تھا سردار شاہ نے کہا کہ 
یاسمین لاری یوایس کے فنڈز پر کام کرتی ہیں بڑا نام اور کردار ہے ان کا، وہ والینٹری کام کرتی ہیں ، ان کی خدمات کو سراہتے ہیں، مکلی پر بھی انہوں نے کام کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں