مہمند ڈیم پر سندھ کے بڑے اعتراضات سامنے آگئے ۔ سندھ کے حصے کا پانی مزید کم ہو جائے گا۔ وزیر زراعت

سندھ کے وزیر زراعت محمد اسماعیل راہو کا مہمند ڈیم کے متعلق جاری کردہ اہم بیان۔مہمند ڈیم بنانے سے پہلے سندھ کو آن بورڈ لیا جائے خدشات ختم کئے جائیں۔سندھ کےآبی ماہرین مہمند ڈیم بننے پر خدشات کا اظہار کر رہے ہیں۔  خدشہ ہے کہ مہمند ڈیم بننے سے سندھ کے حصے کا پانی مزید کم ہوجائے ۔ سوات ندی کا پانی کابل ندی کے ذریعے دریائے سندھ میں شامل ہوتا ہے جو ڈیم میں جانے سے دریائے سندھ میں نہیں جاسکے گا۔


سندھ حکومت مہمند ڈیم کے بننے کی مخالف نہیں، ڈیم بننے کہ بعد کے پی کے والے پانی کے حصے پر نظرثانی کرنی چاہیے۔سندھ حکومت  مہمند ڈیم میں صرف سیلاب کا اضافی پانی چھوڑا جائے، پانی کا بہائو ڈیم کی جانب موڑنے سے سندھ زیادہ متاثر ہوگا۔دریائے سندھ پہلے ہی پانی کی قلت کا شکار ہے اور سندھ کو اب بھی اپنے حصے کا پانی کم مل رہا ہے۔ڈیم بننے سے سندھ کے ساحلی علاقوں میں پانی کی قلت مزید بڑھ جائے گی۔وفاقی حکومت ہمیں یقین دلائے کہ مہمند ڈیم بننے سے سندھ کے حصے کے پانی سے کٹوتی نہیں ہوگی۔مہمند ڈیم بننے سے سندھ کو نقصان اور کے پی کو فائدہ پہنچے گا۔بھاشا ڈیم بننے سے سندھ کو فائدہ ہوگا۔سندھ حکومت کا موقف

اپنا تبصرہ بھیجیں