روٹی کپڑا مکان تو نہ ملا ایڈز زدہ سندھ مل گیا

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما کریم الشیخ نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا ہے کہکچھ ماہ پہلے حیدرآباد میں ایڈز کے کیسز آئے تھے. اس وقت بھی قرارداد جمع کروائی تھی. الٹا اس وقت میرے خلاف پریس کانفرنس کردی گئی تھی. اس وقت میری بات سن لی جاتی تو آج لاڑکانہ واقعہ نہیں ہوتا. نہ روٹی ملی نہ کپڑا ملا نہ مکان ملا ایڈز زدہ سندھ مل گیا. وزیر صحت کی رپورٹ کے مطابق پورے سندھ میں اسکریننگ نہیں کی جا سکتی. سندھ میں 15 ہزار 4 سو ترانوے ایڈز کے کیسز ہیں. 


سندھ کی آبادی پنجاب سے بہت کم ہے لیکن ایڈز کی تعداد سندھ میں زیادہ ہے. دس سالوں میں اربوں روپے کا بجٹ تھا. ایک ڈاکٹر کو زمےدار قرار دے گر اپنے اوپر سے زمےداری نہیں ہٹائی جاسکتی. سندھ کے باسیوں دیکھو کہاں گئی روٹی کپڑا مکان،عصمت کی رپورٹ ٹھیک آگئی ہے اب یہ وہ ہی لیبارٹری ہے جہاں شراب کی بوتل شہد بن جاتی ہے . رپورٹس خراب کی جا رہی ہیں، محکمہ صحت تباہ ہوچکا ہے، بہت کچھ ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے اسمبلی میں بات نہیں کرنے دی جاتی ہے، صرف ڈاکٹر کوذمہ دار قرار دینا ٹوپی ڈرامہ ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں