شکراللہ کا کہ ان کو سندھیوں کی ناانصافی کاخیال آگیا ، وزیر توانائی امتیاز شیخ

کراچی – سندھ کے وزیر توانائی امتیاز شیخ نے کہا ہے کہ تھر کے کوئلے سے صرف بجلی ہی نہیں بلکہ آٹھ مختلف اقسام کی گیس اور اسٹیل بھی بنائی جاسکتی ہیں تھر کے کوئلہ کو ٹیسٹ کرانے کے لئے امریکہ بھیجیں گے وہ جمعرات کو سندھ اسمبلی میں وقفہ سولات کےدوران ارکان کے مختلف تحریری و ضمنی سولات کے جواب دے رہے تھے امتیاز شیخ کا مزید کہنا تھا کہ حکومت سندھ کی جوائنٹ وینچر میں سندھ اینگرو کول مائننگ ایس ای سی ایم سی منصوبے میں 4۔110 ملین ڈالر بنتی ہے پہلے مرحلے میں حکومت سندھ نے ای بی ایل سی سندھ کوئلہ ترقیاتی فنڈ جاری کیا گیا منصوبے کے لئے پہلے مرحلے میں 561۔11 بلین روپے فنڈ جاری کیا گیا عارف جتوئی نے سوال کیا کہ  جب تھر کول میں اینگرو کے ساتھ معاہدہ کیا گیا اس وقت یہ دس بلین آج ڈیڑہ کھرب بن چکا ہے جس کے جواب میں امتیاز شیخ کا کہنا تھا کہ یہ پاکستان کا سب سے بڑا پی پی منصوبہ ہےہم نے جوساورین گارنٹی دی وہ مدت تک تکمیل ہوجائے گی شکر ہے اپوزیشن رکن کو اس  کا خیال آگیا یہ صرف انرجی سیکیورٹی نہیں ملک کی بجلی کی سیکیورٹی ہے یہ کول منصوبہ صرف بجلی نہیں آٹھ قسم کے کیمیکل بھی بنیں گے محترمہ شہید کا تھر بدلے گا پاکستان کا نعرہ ایسے ہی نہیں اس میں بہت کچھ ہے اپوزیشن لیڈر فردوس شمیم نقوی نے کہا کہ سب کو پتہ ہےکہ میں تھرکول مائننگ کمپنی میں ڈائریکٹررہاہوں پیپلزپارٹی کی پسندیدہ کمپنی پاک اواسس کو  ہی ٹھیکے  ملتے ہیں تھرکول مائننگ میں پاک اواسس کو دیاگیاکنٹریکٹ تاخیرکاشکارہوا اسکے جواب میں وزیر توانائی نے کہا کہ تھرکول مائننگ اور کول پاور پلانٹ کافیزون مکمل ہوگیا تھرکول مائننگ میں غیرملکی سرمایہ کاری ہورہی ہے تھرکاکوئلہ ٹیسٹ کےلیےامریکہ بھیجیں گے تھرکوئلے سےسینتھٹک گیس اور اسٹیل بھی بن سکتی ہے۔


دوارب ڈالر کی مزید سرمایہ کاری تھرمیں آرہی ہے ایک موقع پر ضمنی سوال پوچھنے کے دوران جی ڈی اے کے رکن عارف مصطفےٰ جتوئی طیش میں آگئے انہوں نے کہا کہ تھر کول منصوبہ ناکام ہوگیا تو کیا ہوگا جس پر وزیر توانائی نے کہا کہ ان سے پیپلزپارٹی کی کامیابی ہضم نہیں ہورہی تھر کول منصوبہ ناکام ہونے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا عارف جتوئی نے کہا کہ سندھ کےعوام کےساتھ ناانصافی ہورہی ہے انہوں نے کہا کہ اگر وزیر ایوان میں درست جواب نہیں دیتاتواستحقاق مجروح ہوتاہے امتیاز شیخ نے کہا کہ شکراللہ کاکہ انکو سندھیوں کی ناانصافی کاخیال آگیا ہے پاکستان کاسب سب سےبڑا کول پاورپلانٹ نجی شعبےکی سرمایہ کاری سےکامیاب ہوگیا تھرکا کوئلہ صرف بجلی پیداوار کےلیےنہیں دیگرشعبوں میں بھی استعمال ہوگا تھرکول پاکستان کی انرجی سیکورٹی ہے عارف جتوئی بولے کہ وزیرتوانائی کےجواب اور تحریری جوابات میں فرق ہے اپوزیشن رکن جذباتی ہوجاتے ہیں سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی میں سندھ حکومت کاحصہ 54فیصدہےامتیازشخ نے کہا یہ میرے چیمبر میں آجائیں۔


سمجھادوں گا اسپیکر بولے کہ آپ چیمبر میں کیاپلائیں گے کیاکھلائیں گے؟ وزیر توانائی نے کہا کہ اگر انکی کوئی خاص فرمائش ہےتو بتائیں گے جس پر ایوان میں قہقہے بکھر گئے۔ وزیر توانائی نے کہا کہ ونڈ مل کے لئے 54 ہزار ایکڑ زمین مارک کی گئی کچھ زمین وفاقی ادارے اے ای ڈی بی کو دی گئی انہوں نے ونڈ مل کمپنیز کو بھی زمین دی زمین کے نرخ ڈی سیز طے اور حتمی فیصلہ بورڈ آف ریوینیو کرتا ہے ونڈ ملز کے لیئے ایک ہزار گیارہ سو ایکڑ زمین پر پراجیکٹ لگ چکے ہیں انہوں نے کہا کہ اوگرا، سینٹرل پاور پرچیزنگ، این ٹی سی ڈی میں سندھ کو نمائندگی دی جائے کیونکہ بجلی کی قیمتوں کے تعین سے متعلق ہمیں اعتماد میں نہیں لیا جاتا، یہ ادارے ازخود بجلی گیس کے نرخوں میں اضافہ کردیتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں