فیصل رضا عابدی سرخرو ہوگئے ۔ عدالت سے باعزت بری

اپنی شعلہ بیانی کی وجہ سے شہرت رکھنے والے پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما اور سابق سینیٹر فیصل رضا عابدی عدالت میں بھی سرخرو ہوگئے۔انسداد دہشت گردی کی عدالت نے عدلیہ کے خلاف اشتعال انگیز انٹرویو کرنے کے کیس میں باعزت بری کردیا صرف فیصل رضا عابدی کو ہی بری نہیں کیا گیا بلکہ ان کے ساتھ شریک ملزمان احسن سلیم اور ہنس مسرور کو بھی بری کرنے کا حکم دیا گیا ہے یاد رہے سپریم کورٹ اور ججز کے خلاف توہین آمیز زبان استعمال کرنے کے الزام پر عدالت میں فیصل رضا عابدی کے خلاف توہین عدالت کا مقدمہ سماعت کے لیے مقرر کیا گیا تھا.


فیصل رضا عابدی پر الزام تھا کہ انہوں نے ایک ویب ٹی وی پر چیف جسٹس آف پاکستان کے خلاف اشتعال انگیز انٹرویو دیا تھا جس پر تھانہ سیکرٹریٹ اسلام آباد کے ایک اے ایس آئی کی مدیت میں ایف آئی آر کاٹی گئی تھی پولیس نے ملزم کو ہتھکڑی لگا کر عدالت میں پیش کیا تھا ان کی درخواست ضمانت خارج کر دی گئی تھی فیصل رضا عابدی کا انٹرویو لینے والی خاتون اینکر کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری بھی جاری ہوئے تھے بعدازاں فیصل رضا عابدی کی مختلف مقدمات میں ضمانت منظور ہوگئی تھی ان کے علاوہ مختلف مقدمات بنے تھے فیصل رضا عابدی کو ایک اور مقدمے میں آج بری کر دیا گیا۔
فیصل رضا عابدی اپنے سیاسی کیریئر کے دوران مختلف متنازعہ بیانات کی وجہ سے خبروں میں رہے ہیں اور ان کا سیاسی کیرئیر تنازعات سے بھرا ہوا ہے لیکن وہ اپنی بات ڈنکے کی چوٹ پر کرنے کے عادی ہیں اور بولے بغیر چپ نہیں رہ پاتے اوکے اپنے بولنے کی قیمت بھی چکاتے ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں