جاوید میاں داد وزیراعظم عمران خان کے خلاف کیوں بول رہے ہیں؟

ایک ساتھ کرکٹ کھیل کر پاکستان کا نام روشن کرنے اور پاکستان کے لیے ورلڈ کپ جیت کر پوری قوم کا سر فخر سے بلند کرنے والے جاوید میاں داد آج وزیراعظم عمران خان کے خلاف کیوں بول رہے ہیں ایسا کیا ہوگیا ہے کہ جاوید میاں داد کو بار بار بتانا پڑ رہا ہے کہ عمران خان کو یہ سمجھنا چاہیے کہ ملک میں لوگوں کو روزی روٹی کے لالے پڑے ہیں آپ ڈپارٹمنٹل کرکٹ ختم کرکے قوم کی خدمت نہیں بلکہ بےسکونی میں اضافہ کریں گے ۔جاوید میاں داد جو کچھ بول رہے ہیں کیا وزیراعظم عمران خان کو ان باتوں کا واقعی کوئی ادراک نہیں ۔جاوید میاں داد کو یہ باتیں میڈیا پر کرنے کی ضرورت کیوں پیش آرہی ہے کیا وہ براہ راست وزیراعظم عمران خان سے رابطہ کرکے یہ باتیں انہیں گوشگزار نہیں کر سکتے تھے کیا وزیراعظم عمران خان کے پاس جاوید میاں داد سے ملاقات کرنے اور ان کو سننے کا وقت نہیں رہا ؟



جاوید میاں داد باربار کہہ رہے ہیں کہ معاشی حالات کے باعث پہلے ہی معاشرے میں بے چینی ہے جس عام آدمی کے پاس نوکری نہیں ہوگی وہ کرکٹ پر کیسے توجہ دے گا کرکٹ بورڈ صرف یہ بتا دے کہ اتنے سارے بےروزگار کرکٹرز کہاں کھپائیں گے ۔جاوید میاں داد نے سوال بھی اٹھایا ہے کہ عبد الحفیظ کاردار ایک ذہین کرکٹر سے انہوں نے ڈپارٹمنٹل کرکٹ شروع کرائی تو کیا بے وقوفی کی تھی ؟
جاوید میاں داد کے حامیوں کا کہنا ہے کہ جاوید میاں داد بالکل ٹھیک کہہ رہے ہیں اور ٹھیک کر رہے ہیں وزیراعظم کو اندازہ نہیں ہے کہ نیچے حالات کیا ہیں جبکہ جاوید میاں داد کے ناقدین کا کہنا ہے کہ جاوید کو یہ باتیں خود وزیراعظم سے ملاقات کرکے کرنی چاہئے ان کو میڈیا کے ذریعے پھیلانے سے کیا حاصل ہوگا بعض مبصرین کا خیال ہے کہ جاوید میانداد کرکٹ بورڈ کے معاملات کو اپنی مرضی سے چلانے کی خواہش رکھتے ہیں اور شاید وہ توقع رکھتے تھے کہ عمران خان وزیراعظم بننے کے بعد کرکٹ بورڈ کے معاملات اور فیصلوں کے حوالے سے جاوید میاں داد کی رائے کو اہمیت دیں گے اور ان کو کوئی اہم رول دیا جائے گا لیکن اب تک ایسا نہیں ہوسکا اس لئے جاوید میاں داد نے میڈیا میں آکر کرکٹ بورڈ اور حکومت پر دباؤ بڑھا دیا ہے ۔



جاوید میاں داد ایک عظیم کھلاڑی ہیں دنیا بھر میں ان کی باتوں کو اہمیت دی جاتی ہے وہ ایک ایسے وقت میں پاکستان کرکٹ بورڈ اور پاکستان میں کرکٹ کے سسٹم اور وزیراعظم کی باتوں پر تنقید کر رہے ہیں جب ساری دنیا کی توجہ ورلڈ کپ کرکٹ ٹورنامنٹ پر لگی ہوئی ہیں اور ایسے میں کسی بڑے کھلاڑی کا کوئی بیان سامنے آنا انٹرنیشنل میڈیا کے لئے بہت اہمیت رکھتا ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں