وزیراعظم عمران خان کے خلاف سابق وزیر خارجہ حنا ربانی کھر کی قومی اسمبلی میں دھواں دھار تقریر

پاکستان کی سابق وزیر خارجہ حنا ربانی کھر نے وزیراعظم عمران خان کے دورہ ایران کے دوران دیے جانے والے دہشت گردی سے متعلق بیان پر قومی اسمبلی میں ان کے خلاف دھواں دھار تقریر کر ڈالی۔ قومی اسمبلی کا اجلاس ہنگامہ خیز رہا اس دوران ایوان کی کارروائی کو روکا بھی گیا قومی اسمبلی کا اجلاس ڈپٹی سپیکر قاسم سوری کی زیرصدارت ہو رہا تھا اور وہ زیادہ تر وقت شورشرابے کی نذر ہوگیا اپوزیشن ارکان نے اسپیکر ڈائس کے سامنے گھر آؤں گی کیا اور ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑ دیں اس سے پہلے پیپلز پارٹی کی رہنما حناربانی گھر نے دھواں دھار تقریر کرتے ہوئے کہا ایسا کہیں بھی نہیں ہوتا کہ کوئی ملک کو ٹھیک کرنے کی بات کرے اور آپ اسی شخص کو ملک دشمن قرار دے دیں وزیراعظم کے دورہ ایران پر بات کرتے ہوئے حنا ربانی کھر نے کہا ہمارے منتخب وزیراعظم اس بات کا اعتراف کررہے ہیں کہ ماضی میں ہماری سرزمین پڑوسی ملک میں دہشت گردی کے خلاف استعمال ہوئی




انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کو ریاستی امور چلانے کے لیے اگر ٹریننگ چاہیے تو وہ پہلے ٹریننگ حاصل کرلیں اور پھر دوبارہ منتخب ہو لیکن اس ملک کو مزید شرمندہ نہ کریں حنا ربانی کھر نے کہا کہ نریندر مودی نے ریاستی دہشت گردی کو استعمال کرتے ہوئے کشمیر میں قتل عام کیا پیلٹ گنز کا استعمال کیا ۔وہ بوچر آف گجرات بنا ۔لیکن پاکستان کا وزیراعظم کہہ رہا ہے کہ مودی کے دوبارہ اقتدار میں آنے کے بعد مسئلہ کشمیر حل ہوگا۔ حناربانی کرنے کا حکومتی پالیسیوں پر افسوس کیا جاسکتا ہے موجودہ حکومت کی غلطیوں کی وجہ سے ہم دنیا میں منہ دکھانے کے قابل نہیں رہے پاکستان پیپلز پارٹی اپنے لیے نہیں بلکہ پاکستان کا مذاق بنتے دیکھ کر پریشان ہے حکومت کو اس ملک کی قسمت کے ساتھ کھیلنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی ۔



اپنا تبصرہ بھیجیں