فاطمہ جناح کو بھی ملک دشمن کہا گیا تھا ۔ قومی اسمبلی میں بلاول بھٹو زرداری کی اہم تقریر

قومی اسمبلی کے اجلاس میں یاد دلایا گیا کہ سیاستدانوں پر الزامات کوئی نئی بات نہیں ہے بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح کی بہن محترمہ فاطمہ جناح کو بھی ملک دشمن کہا گیا تھا۔ قومی اسمبلی کے اجلاس میں یہ باتیں پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے تاریخ کے اوراق پلٹتے ہوئے سب کو یاد دلائیں۔ بلاول بھٹو زرداری نے تقریر کرتے ہوئے کہا ہمارے لئے الزامات کوئی نئی بات نہیں شہید بے نظیر بھٹو اور ذوالفقار علی بھٹو کے علاوہ فاطمہ جناح کو بھی ملک دشمن کہا گیا تھا۔ موجودہ حکومت ہمیں ملک کے لیے خطرہ کہتی ہے اور سمجھتی ہے کہ یہ دھمکیوں سے ڈر جائیں گے لیکن یہ ان کی بھول ہے ہم جب ضیاء اور مشرف جیسے آمر سے نہیں ڈرے تو اس کٹھ پتلی سے کیوں ڈریں گے. بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ حکومت نے ایسا وزیر داخلہ بنایا




جس پر بے نظیر بھٹو کے قتل کا الزام ہے اور وزیر خزانہ کو نکال کر آصف علی زرداری کے وزیر خزانہ کو رکھا گیا میں تو پہلے ہی کہہ رہا تھا اور ان نااہل ہیں ۔وزیراعظم اپنے وزیروں کو نکال کر اپنی ناکامی کو چھپانا چاہتے ہیں مہنگائی نے عوام کی کمر توڑ دی ہے بجلی گیس پیٹرول اور یہاں تک کہ ادویات بھی مہنگی ہوگئی ہیں پاکستان کے عوام مہنگائی کے سونامی میں ڈوب رہے ہیں میرے خدشات تھے کہ ملک میں مہنگائی میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے جس سے وفاقی وزیر خزانہ نے اتفاق بھی کیا تھا لیکن وزیروں نے میری پیٹھ پیچھے میرے خلاف بات کی اور ملک دشمن کے الفاظ استعمال کیے ۔یہ کوئی نئی بات نہیں اس ملک میں تو فاطمہ جناح کو بھی ملک دشمن کہا گیا تھا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں