نئے مشیر خزانہ حفیظ شیخ کا ابراج گروپ سے تعلق؟

مشیر خزانہ حفیظ شیخ کا ابراج گروپ سے کیا تعلق ہے اس حوالے سے گرما گرم بحث شروع ہو گئی ہے وہی ابراج گروپ جس کے سربراہ عارف نقوی کو لندن میں مقدمات اور گرفتاری کا سامنا ہے اور امریکہ کے حوالے کیے جانے کی باتیں ہو رہی ہیں ۔ابراج گروپ کے سربراہ عارف نقوی کا تعلق پاکستان سے ہے اور انہوں نے پاکستان میں کے الیکٹرک اور امن فاؤنڈیشن جیسی بڑی کمپنیوں میں بھاری سرمایہ کاری کر رکھی ہے اور یہ کمپنیاں اپنی کے نام اور گروپ سے پہچانی جاتی ہیں اور اس گروپ کو دبئی اور لندن میں مالی بحران کا سامنا ہے اس کے خلاف مقدمات ہیں اور گرفتاریوں کا خدشہ ہے جبکہ امریکہ بھی عرب نے کوئی سے پوچھ گچھ کرنا چاہتا ہے اور وہ اسے اپنی تحویل میں رکھنے کے لیے کوشش کر رہا ہے پاکستان کے نئے مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ پیپلزپارٹی کے سابقہ دور حکومت میں دو سال تک وزیر خزانہ رہے تھے پہلے ان کو مشیر بنایا گیا تھا پھر سینیٹر بنا کر وزیر خزانہ بنا دیا گیا تھا بعد ازاں اور سیب لے کر چلے گئے تھے اور اس کے بعد سیاست سے الگ رہے اور انہوں نے ابراج گروپ کے لیے ایڈوائزر کا رول ادا کیا یو ابراج گروپ اور عالم نقوی کے ساتھ ان کا گہرا اور پرانا تعلق ہے ابراج گروپ اور عارف نقوی اس وقت بحرانی صورتحال سے دوچار ہیں اور ان کے پرانے واقف کار اور ایڈوائزر حفیظ شیخ اس وقت پاکستان کے خزانے کے مالک بن چکے ہیں




سیاسی حلقوں میں یہ بحث ہو رہی ہے کہ کیا حقیقی اپنے سابق گروہ ابراج گروپ کے سربراہ علی نقوی کو ریسکیو کرنے کے لیے اپنا کردار ادا کریں گے اور کیا اس مقصد کے لیے پاکستانی وسائل اور پاکستان کا خزانہ استعمال ہو سکتا ہے ۔جو لوگ عارف نقوی کو قریب سے جانتے ہیں ان کا ماننا ہے کہ وہ خود کو مالی مشکلات سے نکالنے کے لیے حفیظ شیخ کی مدد ضرور لیں گے جبکہ پیشے کے قریبی ذرائع کا کہنا ہے حفیظ شیخ اصول  پسند آدمی ہیں یہ ضروری نہیں کہ عارف نقوی اگر ان سے مدد کے لیے کہیں تو وہ اس کام کے لیے کوئی بے اصولی کریں ۔حفیظ شیخ نے اگر ان کی کوئی مدد کرنے کا فیصلہ کیا گیا تو وہ صرف قانونی دائرہ کار میں رہ کر ان کی مدد کریں گے وہ ایسے آدمی نہیں کیونکہ لیے کوئی غیر قانونی کام کریں۔ پاکستان کے سینئر صحافی حامد میر نے بھی اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے ٹی وی پر اپنے تبصرے میں بتایا ہے کہ حفیظ شیخ سیاست سے الگ ہونے کے بعد ابراج گروپ میں بطور ایڈوائزر کام کرتے رہے ہیں اور ابراج گروپ کے سربراہ عارف نقوی اس وقت سخت مشکلات میں ہیں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں