حضرت لعل شہباز قلندرؒ کا 767 واں عرس

صوبے بھر میں سیکیورٹی کے جملہ اقدا‫مات کو انتہائی مستعداورالرٹ رہتے ہوئے یقینی بنایا جائے۔ آئی جی سندھ

آئی جی سندھ ڈاکٹر سید کلیم امام نے پولیس کوجاری احکامات میں کہا ہے کہ حضرت لعل شہباز قلندرؒکے عرس کی تین روزہ تقریبات کے موقع پر صوبے بھر میں سیکیورٹی کے جملہ اقدامات پر عمل درآمد کو انتہائی مستعد اور الرٹ رہتے ہوئے یقینی بنایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ لعل شہبازقلندرؒکے مزار اور  اسکے اطراف کے علاقوں میں کڑی نگرانی،بم ڈسپوزل اسکواڈ سے سوئپنگ اور کلیئرنس سمیت انٹیلی جینس کلیکشن اور شیئرنگ اور بروقت فالو کرنے کے عمل کو ہرسطح پر انتہائی مربوط اور مؤثر بنایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ مرتب کردہ غیرمعمولی سیکیورٹی پلان کی جملہ ترجیحات اوراسکے تحت مزار کے داخلی روٹ پر عرس کے شرکاء کی فزیکل سرچنگ کے عمل کو منتظمین کی جانب سے مقررکردہ رضاکاروں کے تعاون سے ممکن بنایا جائے جبکہ اس عمل کے دوران خواتین پولیس اہلکاروں کی خدمات کو بھی یقینی بنایا جائے۔ آئی جی سندھ نے کہا کہ سندھ کے تمام شہروں اوردیگر صوبوں سے عرس کی تقریبات میں زائرین وعقیدت مندوں کی ایک کثیرتعدادمیں شرکت کو پیش نظر رکھتے ہوئے مزار کے اندرونی اور اطراف کے حصوں میں منتظمین کی مشاورت سے مجموعی سیکیورٹی امور کو غیرمعمولی بنایا جائے۔علاوہ ازیں مزار کے اطراف اورمزار کی مرکزی شاہراہ پر کسی بھی قسم کی پارکنگ کو ممنوع رکھا جائے جبکہ زائرین اورقافلوں کی گاڑیوں کے لئے پارکنگ لاٹس مزار سے ناصرف مناسب فاصلوں مختص کی جائے بلکہ پارکنگ لاٹس پرکڑی نگرانی اوربم ڈسپوزل اسکواڈ سے تمام گاڑیوں کی سرچنگ کو بھی ممکن بنایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ تمام ہائی ویز،بارڈرایریاز، جبکہ دیگرصوبوں سے سندھ میں داخل ہونے والے میدانی راستوں کے ساتھ ساتھ داخلی وخارجی راستوں پر ناکہ بندی،نگرانی،سرچنگ اور پیٹرولنگ جیسے اقدامات کو بھی متعلقہ تھانوں کے لحاظ سے مربوط اور مؤثر بنایا جائے۔ آئی جی سندھ نے جاری ہدایات میں کہا کہ متعلقہ تمام ایس ایس پیزعرس کی تقریبات کے آغازسے لیکراختتام تک تمام ایس ایچ اوز کو علاقوں میں موجود رہنے اورلمحہ بہ لمحہ انٹری نوٹ کرانے کے ساتھ ساتھ سیکیورٹی کے جملہ اقدامات کی نگرانی کا بھی پابند بنائیں گے۔ انہوں نے مذید کہا کہ عرس کی تقریبات کی سیکیورٹی پرمامور افسران اورجوانوں کو تمام ترضروری سہولیات کی فراہمی کویقینی بنایا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں