نواز شریف اور مریم … کلثوم نواز شریف کے انتقال کے بعد پہلی شب برات پر انتہائی غمگین رہے ۔

سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کے خاندان کے تمام افراد بیگم کلثوم نواز کے انتقال کے بعد آنے والی پہلی شب برات کے موقع پر انتہائی غمگین رہے بالخصوص مریم نواز شریف اپنی والدہ کے علم میں بہت نڈھال ہیں۔ اس کا اندازہ شب برات پر ان کی جانب سے اپنی والدہ کی یاد میں کیے گئے ایک tweet کو پڑھ کر لگایا جاسکتا ہے ۔انہوں نے اپنی مرحومہ والدہ کی وفات پر میاں محمد بخش کا شعر لکھا۔
عیداں تے شبراتاں آئیاں ، سارے لوکی گھراں نوں آئے ۔ او نہیں آیے محمّد بخشا جیڑھے آپ ہتھیں دفنائے۔

اس کا مطلب کچھ یوں ہے کے خوشی کے موقع پر بھی لوگوں کے پیارے گھروں کو لوٹ آئے ہیں لیکن وہ نہیں لوٹ سکے جو وفات پا چکے ہیں اور جنہیں خود ہم نے اپنے ہاتھوں سے دفنایا ہے کیونکہ وہ ہمیشہ کے لئے بچھڑ گئے ہیں۔
یاد رہے کہ بیگم کلثوم نواز شریف 11 ستمبر 2018 کو لندن میں وفات پا گئی تھی اس وقت ان کے بیٹے حسن نواز اور حسین نواز ان کے پاس تھے شہباز شریف اور دیگر رشتہ دار بیگم کلثوم نواز کی میت کو لے کر لندن سے پاکستان آئے تھے ۔اس وقت نواز شریف جیل میں تھے انہیں اور مریم نواز کو پے رول پر رہا کیا گیا تھا۔
نواز شریف اور کلثوم کی شادی انیس سو اکتر کو ہوئی تھی ان کے چار بچے ہیں نواز شریف کے تین مرتبہ وزیراعظم بننے کی وجہ سے بیگم کلثوم نواز بھی تین مرتبہ پاکستان کی خاتون اول رہی نواز شریف کو سپریم کورٹ کی جانب سے نااہل قراردیئے جانے کے بعد بیگم کلثوم نواز نے ان کی سیٹ سے الیکشن لڑا اور کامیابی حاصل کی لیکن بیماری کے باعث وہ اپنی رکنیت کا حلف نہ اٹھا سکی ۔بیگم کلثوم نواز نے انیس سو ننانوے میں جنرل پرویز مشرف کی جانب سے نواز شریف حکومت کا تختہ الٹے جانے کے بعد اپنے شوہر کی رہائی اور جمہوریت کی بحالی کے لیے دلیرانہ اور جراتمندانہ انداز میں تحریک کی قیادت کی ۔ان کا تعلق پاکستانکے مشہور پہلوان خاندان گاما پہلوان خاندان سے تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں