بھارت کا ممکنہ حملہ ۔ امریکہ نے اپنے شہریوں کو پاکستان کے غیرضروری سفر سے روک دیا ہے

امریکہ کے محکمہ خارجہ نے اپنے انتباہ میں کہا ہے کہ پاکستان کے مختلف علاقوں میں نےبلوچستان  خیبر پختونخواہ آزاد کشمیر پاک بھارت سرحدی علاقوں میں دہشت گردی کے حملوں کا شدید خطرہ ہے لہذا امریکی شہری ان علاقوں میں پاکستان کا غیر ضروری سفر نہ کریں ۔امریکہ سے قبل اپنے شہریوں کو 35 ملکوں کے سفر کے حوالے سے خبردار کر چکا ہے ۔جن میں بھارت ترکی چین ایران اور پاکستان شامل ہیں ۔امریکی محکمہ خارجہ نے امریکی شہریوں کو نہ صرف پاکستان کے صوبوں کا رقبہ کون تھا بلوچستان میں غیر ضروری سفر سے روکا ہے بلکہ آزاد کشمیر اور پاک بھارت سرحدی علاقوں کو بھی ان کے لیے نوگو ایریا قرار دیا ہے ان علاقوں میں امریکی شہریوں کیا ہوا اور دہشت گردی کے حملوں کا خطرہ ہے جبکہ بھارت میں امریکی شہریوں پر جنسی تشدد جرائم و دہشت گردی کا خطرہ ہے امریکی محکمہ خارجہ کے مطابق امریکی شہری پاکستان کا سفر کرنے سے پہلے سوچیں پشاور میں امریکی قونصل خانہ ان کو بروقت مدد فراہم نہیں کرسکے گا اس ٹریول ایڈوائزری کو ٹائمنگ کے حوالے سے بڑی اہمیت دی جا رہی ہے یاد رہے کہ سات اپریل کو وزیر خارجہ پاکستان شاہ محمود قریشی نے کہا تھا کہ انڈیا 16 سے 20 اپریل کے دوران حملہ کر سکتا ہے پاکستان نے یو این سیکورٹی کونسل کے مستقل ممبران کو بھی صورتحال سے آگاہ کر دیا تھا پاکستان میں بھارت کے درمیان کشیدگی کا آغاز 14 فروری میں پلوامہ کے واقعے کے بعد ہوا جس کے بعد 27 فروری کو انڈیا نے پاکستان میں اسٹرائیک کا دعویٰ کیا اور پاکستان نے اس کے جہازوں کو مار کر ایک پائلٹ گرفتار کر کے بعد میں واپس کر دیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں