امن وامان کی بہتری کے لئے وفاقی حکومت صوبائی حکومت کی بھرپور معاونت کرے گی. صدر مملکت

کوئٹہ ۔ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی مختصر دورہ پر کوئٹہ پہنچے تو گورنر بلوچستان جسٹس ریٹائرڈ امان اللہ خان یاسین زئی، وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان ، صوبائی وزراء میر نصیب اللہ مری، میر ظہور احمد بلیدی، محمد خان لہڑی، آئی جی پولیس اور دیگر حکام نے صدر کا استقبال کیا، بعدازاں صدر مملکت سے گورنر اور وزیراعلیٰ نے گورنر ہاؤس میں ملاقات کی جس کے دوران صوبے میں سیکوریٹی کی صورتحال سمیت دیگر اہم امور پر تبادلہ خیال کیا گیا، وزیراعلیٰ نے صدر مملکت کو صوبے میں امن وامان کی بہتری اوردہشت گردی کے خاتمے کے لئے جاری اقدامات سے آگاہ کیا، صدر نے اس ضمن میں صوبائی حکومت کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے یقین دلایا کہ امن وامان کی بہتری کے لئے وفاقی حکومت صوبائی حکومت کی بھرپور معاونت کرے گی، صدر مملکت گورنر، وزیراعلیٰ اور صوبائی وزارء کے ہمراہ امام بارگاہ ہزارہ ٹاؤن گئے جہاں انہوں نے ہزارگنجی بم دھماکے کے شہداء کے لواحقین سے ملاقات کی او ان سے تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کیا۔ اس موقع پر شہداء کے لئے فاتحہ خوانی بھی کی گئی، بعدازاں صدر مملکت مغربی بائی پاس پر مسجد جبل نور گئے جہاں انہوں نے سانحہ ہزار گنجی میں مختلف اقوام سے تعلق رکھنے والے شہداء کے لواحقین سے ملاقات کی اور ان سے تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کرنے کے علاوہ شہداء کے درجات کی بلندی کے لئے فاتحہ خوانی کی، صدر نے لواحقین سے بات چیت کرتے ہوئے انہیں یقین دلایا کہ وفاقی اور صوبائی حکومت ان کی معاونت کے لئے ہرممکن اقدامات کرے گی، اس موقع پر وزیراعلیٰ بلوچستان نے کمشنر کوئٹہ ڈویژن کو شہداء کے لواحقین کے لئے حکومتی پالیسی کے مطابق مالی معاونت کے کیسز جلد ازجلد نمٹانے کی ہدایت کی۔ صدر مملکت ایف سی ہسپتال بھی گئے جہاں انہوں نے بم دھماکے کے زخمی ایف سی اہلکاروں کی عیادت کی، انہوں نے سیکیورٹی اداروں کی کارکردگی کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ امن کا قیام سیکیورٹی اہلکاروں کی قربانیوں کی بدولت ہی ممکن ہوا ہے جو نہایت جراء ت اور بہادری کے ساتھ دہشت گردوں کا مقابلہ کررہے ہیں، صدر مملکت سہ پہر کو اسلام آباد روانہ ہوگئے، گورنر وزیراعلیٰ اورصوبائی وزرائے نے صدر مملکت کو ایئرپورٹ پر رخصت کیا۔



اپنا تبصرہ بھیجیں