پشاور: مدرسہ میں دھماکا ،7 بچے شہید ، 70 زخمی

پشاورکےعلاقےدیرکالونی میں مدرسےمیں صبح آٹھ بجےکےقریب جب بچےتعلیم حاصل کرنےمیں مصروف تھے اور معلم نے مائیک پر درس قرآن کا آغاز ہی کیا تھا کہ اچانک زور دار دھماکے ہوا، ہرطرف ہولناک آگ لگ گئی اور زخمیوں کی چیخ وپکار سے درودیوار ہل گئے۔

دھماکے کے نتیجے میں7 بچے شہید اور 70 زخمی ہوگئے ، پولیس اورریسکیو ٹیموں نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ دھماکے کے زخمیوں میں زیادہ ترتعدادبچوں کی ہے، جن کی عمریں 9 سے 15 سال ہیں ، دھماکے کے بعد قانون نافذ کرنے والے اداروں نے جائے حادثے کو گھیرے میں لے لیا ہے اور شواہدجمع کرناشروع کردئیے ہیں۔

اے آر وائی نیوز نمائندے کے مطابق جس وقت دھماکہ ہوا ، اس وقت 50 بچے مدرسے میں موجود تھے اور درس قرآن جاری تھا ، دھماکہ اتنا روز دار تھا کہ پوری عمارت لرز اٹھی، مدرسے کی دیواروں اور ستونوں کو نقصان پہنچا، چھت کاایک حصہ ٹوٹ کرگرگیا جبکہ دروازے اور کھڑکیاں بھی نہیں بچی اور مسجدکی زمیں پرجگہ جگہ گڑھے پڑگئے۔

پشاور لیڈی ریڈنگ اسپتال میں 70 افرادکو منتقل کیا گیا ، جن میں 40 بچے شامل ہیں ،لیڈی ریڈنگ اسپتال میں ایمرجنسی نافذ کرکے ڈاکٹرز کو طلب کرلیا گیا ہے۔

ترجمان لیڈی ریڈنگ اسپتال کا کہنا ہے کہ زخمیوں کوحیات آباد برنس سینٹرمنتقل کیاجارہاہے، دھماکے کے زیادہ ترزخمی جھلسے ہوئے ہیں ، دھماکے کے 72 زخمی اسپتال لائے گئے ہیں، جن میں سے 5زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے جبکہ شہید وزخمی ہونیوالوں کی عمریں 20سے30سال کے درمیان ہیں

Courtesy ary news