بلوچی لباس اس لیے پہننا ہےکہ میں بتانا چاہتی ہوں کہ جتنی محبت مجھے پنجاب اور سندھ سے ہے، اس سے زیادہ محبت مجھے بلوچستان سے ہے


مریم نواز نے کہا کہ میں نے بلوچی لباس اس لیے پہننا ہےکہ میں بتانا چاہتی ہوں کہ جتنی محبت مجھے پنجاب اور سندھ سے ہے، اس سے زیادہ محبت مجھے بلوچستان سے ہے۔ واضح رہے کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم ) کا تیسرا جلسہ کوئٹہ میں جاری ہے۔ جس میں مسلم لیگ ن ، پیپلزپارٹی ،جے یوآئی ف سمیت 11جماعتوں کے قائدین شریک ہیں۔ تمام قائدین جلسے میں شرکت کیلئے کوئٹہ میں موجود ہیں، اس سے قبل نیکٹا کی جانب سے پشاور اور کوئٹہ میں دہشتگردی کا تھریٹ جاری کیا گیا تھا۔


دہشتگردی کے خدشات کے باعث گزشتہ روز ہی بلوچستان حکومت نے اپوزیشن قائدین کے ہوٹل کی سکیورٹی سخت کردی تھی۔ پی ڈی ایم قائدین کو بلٹ پروف گاڑیاں بھی فراہم کی گئیں، جبکہ فول پروف سیکیورٹی کے ساتھ ساتھ ہسپتالوں میں بھی ایمرجنسی بھی نافذ کی گئی۔ کوئٹہ میں دفعہ 144عائد کی گئی ہے، جس کے تحت ڈبل سواری پر پابندی اور موبائل سروس بھی معطل ہے۔ ترجمان بلوچستان حکومت نے کہا کہ جلسے کیلئے فول پروف سیکیورٹی کے انتظامات کیے گئے ہیں۔ پی ڈی ایم کے قائدین کو بلٹ پروف گاڑیاں اور سکیورٹی فراہم کی گئی ہے

پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ فرانس میں توہین آمیز خاکوں سے دلی افسوس ہوا۔ کوئٹہ میں پی ڈی ایم کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے رہنما پاکستان مسلم لیگ (ن) مریم نواز نے کہا کہ فرانس میں توہین آمیز خاکوں سے ہم مسلمانوں کے جذبات مجروح ہوئے۔ گستاخانہ خاکوں سے ہمارے دل دکھے ہیں۔


انہوں نے کہا کہ گستاخانہ خاکوں سے ہم سب کے دل دکھے ہیں، فرانس کی بلڈنگ پر گستاخانہ خاکے آویزاں ہوئے، اس سے ہمارے جذبات مجروح ہوئے ہیں۔ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ بلوچستان کے طلباء کی سکالر شپس کینسل کردی گئیں، یہ حکومت نوجوانوں کو نوکریاں دینے کیبجائے ان سے تعلیم بھی چھین رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے وسائل سارا ملک استعمال کرتا ہے لیکن وہاں کے بچوں کو تعلیم سے محروم رکھنے کی کوشش کی گئی ۔