اگر جاوید میانداد نہ ہوتا تو وسیم اکرم بھی نہ ہوتا: وسیم اکرم

قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان وسیم اکرم نے ساتھی کھلاڑی جاوید میانداد کی تعریف میں ایک پیغام شیئر کیا ہے جس میں انہوں نے لکھا کہ اگر جاوید میانداد نہ ہوتا تو یقیناً کوئی وسیم اکرم بھی نہ ہوتا۔

سوئنگ کے سلطان وسیم اکرم نے سوشل میڈیا پر جاوید میانداد کے ساتھ لی گئی ایک یادگار تصویر شیئر کی اور ساتھ لکھا کہ ’یہ وہ لمحہ تھا کہ جب 1984 میں راولپنڈی میں یہ 17 سالہ نوجوان پاکستان کرکٹ ٹیم کی نمائندگی کیلئے منتخب ہوا
وسیم اکرم نے ٹیم میں شمولیت کا سہرا لیجنڈری بیٹسمین اور سابق کپتان جاوید میانداد کے سر باندھا اور لکھا کہ ’اگر جاوید میانداد نہ ہوتے تو وسیم اکرم نہ ہوتا۔‘

وسیم اکرم کا شمار کرکٹ کی تاریخ کے عظیم ترین فاسٹ بالرز میں ہوتا ہے۔ وہ ون ڈے کرکٹ میں 500 وکٹیں لینے والے پہلے بالر تھے
اس سے قبل سوئنگ کے سلطان وسیم اکرم نے آٹھویں نمبر پر آکر سب سے زیادہ رنز بنا کر عالمی اعزاز اپنے نام کرنے والے دن کو اپنی زندگی کا ناقابلِ فراموش دن قرار دیا تھا۔

وسیم اکرم ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے زیادہ رنز بنانے والے کھلاڑیوں میں شامل ہیں، انہوں نے 1996 میں زمبابوے کے خلاف شیخوپورہ ٹیسٹ میں ناقابلِ شکست257 رنز بنا کر عالمی ریکارڈ اپنے نام کیا تھا جسے 23 برس گزر جانے کے بعد بھی کوئی اُن سے نہیں چھین سکا۔