تعلیم کے فروغ کے لئے ترکی کی کوششیں قابل تحسین ہیں کمشنر کراچی سہیل راجپوت

کمشنر کراچی سے ترکی کے قونصل جنر ل کی ملاقات۔ باہمی دلچسپی کے امور پر بات چیت
سات ہزر میٹر رقبہ پر غیر منافع بخش تعلمی کمپلیس قائم کیا جائے گا۔قونصل جنرل ترکی
تعلیم کے فروغ کے لئے ترکی کی کوششیں قابل تحسین ہیں کمشنر کراچی سہیل راجپوت
کراچی میں ترکی فاﺅنڈیشن کے زیر اہتمام معیاری اسکولوں کا قیام قابل تحسین کوشش ہے
کراچی کے شہریوں کے لئے ٹرانسپورٹ کے حولہ سے ٹرام سروس بہترین ماڈل ہے ۔قونصل جنرل ترکی

کراچی ( ) کمشنر کراچی ڈاکٹر سہیل راجپوت سے ان کے دفتر میں ترکی کے قونصل جنرل تولگا یوک نے ملاقات کی. ترکی کے قونصل جنر ل تولگا یوک نے کراچی میں ترکی حکومت کی جانب سے تعلیم ، ٹرانسپورٹ اور مختلف تجارتی شعبوں میں تعاون کی پیش کش کی ۔ انھو ں نے کہا ترکی کی حکومت کراچی کی ترقی کی خواہاں ہے اور کراچی میں معیاری تعلیم کے فروغ اورٹرام سروس اور دیگر شعبوں میں ترقی کے منصوبوں میں تعاون کرے گی قونصل جنرل ترکی تولگا یوک نے کمشنر کو بتایا کراچی میں ترک حکومت کی جانب سے ایک بین الاقوامی معیار کا تعلیمی کمپلیکس قائم کیا جائے گا۔ ۔ جو سات سے دس ہزار میٹر رقبہ پر قائم ہوگا تعلیمی کمپلیکس غیر منافع بخش ہو گا جہان متوسط طبقہ کے طلبہ جدید تقاضوں کے مطابق معیاری تعلیم حاصل کرسکین گے جس کی فیس متوسط طبقہ کے طلبہ کی استعداد کے مطابق ہوگی ۔ جبکہ بیس فیصد سے زائد مستحق طلبہ مفت تعلیم حاصل کرسکین گے کم از کم ایک ہزار طلبہ کو تعلیم کی سہولت حاصل ہوگی۔ میٹرک اور کیمبرج دونوں تعلیمی نظام کے ذریعے نرسری تا اے لیول تک کی تعلیم دی جائے گی ۔انھوں نے کہا کہ ترکی حکومت کے تعلیمی ادارے المارف انٹرنیشنل فاوئنڈیشن Maarif Internationa l Foundation کے زیر اہمتام پہلے ہی گلشن اقبال، گلستان جوہر اور کلفٹن میں تین اسکولز قائم ہیں ۔ علاوہ ازیں نیو کراچی میں بچوں کے مطالعہ کے لئے ایک لائبریری قائم ہے انھوں نے کہا کہ کراچی میں مزید لائبریریاں قایم کی جائیں گی کراچی مین مزید لائبریریوں کے قیام کے لئے اقدامات کئے جا رے ہیں ۔ قونصل جنر ل نے کمشنر کراچی کو کراچی مین قائم اسکولوں کے دورہ کی دعوت دی ۔ کمشنر نے یقین دہانی کرائی کہ وہ جلدکراچی مین ترکی کے اسکولوں کا دورہ کریں گے انھوں نے کہا کہ ان کی بہتری ا ور سہولتون کی فراہمی کے لئے ہر ممکنہ مدد کی جائے گی ۔ ۔ کمشنر نے ترکی کی جانب سے کراچی میں تعلمی اداوں کا قیام ایک اچھی کوشش قرار دیا انھوں نے کہا کہ یہ کوششیں تعلیم کے میدان مین سندھ حکومت کی ایک قابل قدر مدد ہے یقیننا ان سے کراچی میں تعلیم کے فروغ میں حکومت کی کوششوں کو تقویت ملے گی ۔کمشنر نے جنوبی ، ملیر اور وسطی اور غربی اضلاع کے مضافاتی علاقون میںاسکول قائم کر نے کی خواہش کا اظہار کیا۔ اسلام آباد میں مقیم المارف انٹرنیشنل فاﺅ نڈیشن ترکی کے ڈائریکٹر ہارون اور ایڈیشنل کمشنر کراچی ون اسد علی خان بھی موجو د تھے۔ کمشنر کو بتا یا گیا کہ ملک بھر مین المارف انٹرنیشنل فاﺅ نڈیشن کے زیر اہتمام 27 اسکول قائم ہیں جن میں 14 ہزار سے زائد طلبہ تعلیم حا صل کر رہے ہیں۔ انھون نے ترکی کے نجی اور سرکاری یونیورسٹیوں مین پاکستانی طلبہ اسکالر شپ فراہم کرنے کے پروگرام کی تفصیل سے بھی آگاہ کیا انھوں نے بتا یا کہ ترکی کی اعلی یونیورسٹیوں مین سوشل سائنسز، مینجمنٹ اور میڈیکل کے شعبون مین یونیورسٹی تعلیم کے لئے اسکالرشپ میں اضافہ کیا جا رہاہے۔اس وقت پاکستان کے ایک سو پچاس طلبہ نجی یونیورسٹیوں میں جبکہ پچاس طلبہ سرکاری یونیورسٹیوں میں اسکالرشپ پر تعلیم حاصل کر رہے ہیں انھوںنے بتایا کہ توقع ہے اگلے سال مارچ میں آئندہ پروگرام کی اسکالرشپ کا اعلان کیا جائے گا اسکالرشپ کا اعلان ترکی کے سفارت خانہ کی ویب سائٹ کے ذریعے کیاجاتاہے۔ ۔انھون نے کمشنر کو کراچی مین مجوزہ ٹرام سروس منصوبہ کی تفصیلات سے بھی آگاہ کیا انھوں نے ٹرام سروس منصوبہ میں ہر ممکنہ تعاون کی پیشکش کا اعادہ کیا انھون نے کہا کہ استنبول اور انقرہ سمیت ترکی کے مختلف شہروں مین ٹرام سروس کامیاب سروس ہے ۔ ان کا خیال ہے کہ کراچی کے لئے بھی یہی ماڈل سب سے بہتر ہے انھوں نے کہا کہ منصوبہ پر پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے ذریعے عمل کیا جا سکتا ہے

——————————–کمشنر کراچی کا دورہ ۔ڈپٹی کمشنر کا پریس نوٹ۔
امدادی کاموں کی نگرانی کی ۔ زخمیوں کی عیادت کے لئے اسپتال کا دورہ ۔
ڈاکڑوں کو زخمیوں کی دیکھ بھال کرنے کی ہدایت ۔

کراچی ( 21اکتوبر 2020) کمشنر کراچی سہیل راجپوت نے مسکن چورنگی گلشن اقبال کے قریب ایک عمارت میں ہونے والے دھماکہ کے فوری بعد وقوعہ کا معائنہ کیا ۔ انھوں نے امدادی کاموں کی نگرانی کی انھوں نے اسپتال کا بھی دورہ کیا وہ زخمیوں کی عیادت کے لئے پٹیل اسپتال گئے انھوں نے ڈاکٹروں کو ہدایت کی کہ زخمیوں کی اچھی طرح دیکھ بھال کی جاے۔ دریں اثنا ڈپٹی کمشنر شرقی نے کمشنر کراچی کو رپورٹ پیش کر دی ہے ڈپٹی کمشنر کی رپورٹ کے مطابق دھماکہ نو بجکر تیس منٹ پر ہوا جس میں چار افراد جاں بحق ہوئے ہیں اور 23 افراد زخمی ہوئے جاںبحق افراد میں یاسیرو لد صدیق ،عامر ولد عزیز، خالد ولد سلطان اور عابد ولد احمد علی شامل ہیں زخمیوں میں آٹھ افراد کی حالت نازک ہے پٹیل اسپتال میں اٹھارہ زخمیوں کو داخل کیا گیا ان میں حدیق ولد غلام، آصف ولد علی حسان، سید شہنشاہ حنیف ولد سید مشرف حسین، رب نواز ولد محمد حسان، محمد یاسین ولد محمد حسان، سید جان ولد معروف، محمد شہروز ولد محمد مصطفی ، فرحان ولد محمد افضل، سجاد احمد ولد غلام، ڈاکٹر شاہینیہ ولد احسان اللہ، ارشد ولد سوہنہ، کومل ولد محمد حیدر،نا معلوم، نامعلوم، کاشف ولد نامعلوم، شا ہ رخ، ، لیاقت ولد محمد ندیم ، فضل رضوی شامل ہیں جبکہ جناح اسپتال میں داخل تین زخمی افراد میں گل فاروق ولد پائندہ خان، کاشف ولد عبداللہ اجے ولد پردیپ شامل ہیں ماڈرن اسپتال مین سیف اللہ ار آمنہ شامل ہیں ۔ کمشنر کراچی آفس کے مطابق دھماکہ کے اسباب معلوم کرنے کے لئے تحقیقات جاری ہے ۔