پی پی پی چیئرمین کا صدارتی آرڈیننس کے خلاف سندھ اسمبلی میں متفقہ قرارداد منظور ہونے کا خیرمقدم


پی پی پی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا جزائر کے متعلق صدارتی آرڈیننس کے خلاف سندھ اسمبلی کی قرارداد پر بیان

پی پی پی چیئرمین کا صدارتی آرڈیننس کے خلاف سندھ اسمبلی میں متفقہ قرارداد منظور ہونے کا خیرمقدم

پوری سندھ نے ذات پات، نسل، زبان اور مذہب کی امتیاز سے بالاتر ہوکر آرڈیننس کے خلاف آواز اٹھائی: بلاول بھٹو زرداری

میں نے 18 اکتوبر کو کٹھ پتلی حکومت کو متنبہ کیا تھا کہ وہ اِس بدھ سے پہلے مذکورہ آرڈیننس واپس لے: بلاول بھٹو زرداری

وہ پاکستان آئلینڈ ڈویلپمنٹ اتھارٹی آرڈیننس 2020ع جس کو 2 اکتوبر 2020ع کو نافذ کیا گیا تھا: بلاول بھٹو زرداری

اس آرڈیننس کا مقصد سندھ اور بلوچستان کے جزائر پر قبضہ کرنا تھا: بلاول بھٹو زرداری

یہ عمل صریحاً 1973ع کے آئین کے منافی ہے، وہ زمینیں و جزائر صوبے کی ملکیت ہیں: بلاول بھٹو زرداری

وقت آگیا، وفاقی حکومت مذکورہ آرڈیننس سے بلاتاخیر دستبردار ہوجائے: بلاول بھٹو زرداری

مذکورہ آرڈیننس کو اب سندھ کی منتخب اسمبلی نے بھی ایک بھرپور قرارداد کے ذریعے مسترد کردیا ہے: بلاول بھٹو زرداری

پی ٹی آئی حکومت نے غیرآئینی آرڈیننس کے ذریعے سندھ کی عوام کو انارکی کی جانب دھکیلنے کی سازش کی: بلاول بھٹو زرداری

عوام نے اتحاد ویکجہتی کا مظاہرہ کرکے اس سازش کو ناکام بنا دیا: بلاول بھٹو زرداری

پیپلز پارٹی 1973ع کے متفقہ آئین کی معمار جماعت ہے: بلاول بھٹو زرداری

پیپلز پارٹی اِس ناطے اس دستور کی خلاف ورزی اور صوبوں کے حقوق غصب کرنے کو برداشت نہیں کرے گی: بلاول بھٹو زرداری