ایک شخص کیلئے دنیا کا سب سے چھوٹا ریسٹورنٹ

عالمی وبا کورونا وائرس نے پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لیا ہوا ہے، ہر شخص کسی دوسرے انسان کے ساتھ بیٹھنے اور ہاتھ ملانے سے گریز کر رہا ہے، ایسے میں سویڈن میں ایک ایسا ریسٹورنٹ بنایا گیا ہے جہاں ایک وقت میں صرف ایک ہی شخص بیٹھ کر کھانا کھاسکتا ہے۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق سویڈن میں دنیا کا سب سے چھوٹا ریسٹورنٹ کھولا گیا ہے، یہ ریسٹورنٹ ایک کھلی جگہ پر ہے جس میں صرف ایک کرسی اور ایک میز رکھی گئی ہے تاکہ ایک وقت میں وہاں صرف ایک ہی شخص بیٹھ کر کھانا کھا سکے
اس ریسٹورنٹ کا نام ’Bord för En‘ رکھا گیا ہے یعنی اس کا مطلب ہے کہ ’ایک شخص کے لیے ٹیبل‘ سویڈن کے دارالحکومت اسٹاک ہوم سے 360 کلومیٹر دور وائرملینڈ کے علاقے میں یہ ریسٹورنٹ قدرتی سبزہ زار کے عین درمیان کھولا گیا ہے۔

ریسٹورنٹ میں ایک وقت میں تین ڈشوں پر مشتمل کھانا دیا جاتا ہے لیکن یہ کھانا کوئی بیرا نہیں لائے گا کیونکہ سماجی فاصلے کا بھرپور خیال رکھا گیا ہے۔ اسی لیے چرخی پر بندھی رسی سے ایک ٹوکری کے ذریعے کھانا لایا جائے گا اور گاہک کے سامنے ریسٹورنٹ کا کوئی عملہ موجود نہ ہوگا۔
اس کی وجہ یہ ہے کہ سویڈن میں لاک ڈاؤن پر زور نہیں دیا گیا ہے لیکن باشعور لوگ خود ہی احتیاط اور فاصلے کو یقینی بنارہے ہیں۔ تاہم یہ دلچسپ ریسٹورنٹ اگر کامیاب ہوگیا تو دوسرے بھی اس پر عمل ضرور کریں گے۔

سویڈن حکومت کے مطابق لاک ڈاؤن سے لوگوں پر منفی اثرات مرتب ہوسکتے ہیں اور اسی لیے کورونا وائرس کی سخت شرائط بھی عائد نہیں کی گئی ہیں۔