سندھ سولڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کے قیام کے باوجود صفائی ستھرائی کے اموربورڈ کے حوالے نہ ہوسکے

حیدرآباد ( بیورو رپورٹ) سندھ سولڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کے قیام کے باوجود حیدرآباد میں صفائی ستھرائی کے امور بورڈ کے حوالے نہیں کئے جاسکے، شہر کے ہزاروں ٹن کچرے کو ٹھکانے لگانے کے لئے نہ لینڈفل سائٹس تیار ہوسکیں نہ ہی شہر کے مختلف علاقوں سے کچرا مستقل بنیاد پر اٹھایا جارہا ہے، جبکہ سٹی اور قاسم آباد کا کچرا پھلیلی نہر اور قاسم آباد، مہر علی سوسائٹی کے قریب پھینکا جارہا ہے، جس کی وجہ سے ہزاروں شہری سانس سمیت مختلف بیماریوں میں مبتلا ہیں اس صورتحال کے خلاف شہری مسلسل احتجاج کر رہے ہیں، لیکن اقدامات نہیں اٹھائے جارہے۔ سندھ سولڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کے قیام کے باوجود افسران کی نااہلی، حکومتی و مخالف سیاسی جماعتوں کی مداخلت کے باعث صفائی ستھرائی کے امور بورڈ کے حوالے نہیں کئے جاسکے۔ بلدیہ اعلیٰ، میونسپل کمیٹی قاسم آباد و ٹنڈوجام سمیت سندھ بھر میں بلدیاتی نظام ختم ہونے کے باوجود لطیف آباد، سٹی اور قاسم آباد کے مختلف علاقوں میں صفائی ستھرائی کی خراب

صورتحال برقرار ہے، مکی شاہ روڈ مکرانی پاڑہ میں گذشتہ کئی ہفتے سے مین شاہراہ پر کچرے کے ڈھیر جمع ہیں، اسی طرح مارکیٹ ٹاور و ملحقہ علاقوں میں بھیجگہ جگہ کچرا جمع ہونے کے باعث تاجروں اور شہریوں کا تعفن کے باعث گھروں میں رہنا اور کاروبار کرنا مشکلہورہا ہے، سٹی کے ساتھ گدو چوک، حسین آباد، وحدت کالونی، کوٹری روڈ، انور ولاز، ٹھنڈی سڑک و دیگر علاقوں میں بھی میونسپل کمیٹی قاسم آباد کی نااہلی کے باعث کچرے کے ڈھیر جمع ہیں جس کو ٹھکانے لگانے کے لئے عملہ تیار نہیں، عملہ صرف چند علاقوں میں نمائشی صفائی کرکے چلا جاتا ہے
—-from—jang—-pages—