تابش گوہر کی تقرری قومی خزانے پر ڈاکے کے مترادف ہے، حافظ نعیم

امیرجماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمٰن نے وزیر اعظم عمران خان کا سابق سی ای او کے الیکٹرک تابش گوہر کو معاون خصوصی برائے بجلی مقرر کرنے پر شدید مذمت کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ تابش گوہر کی تقرری قومی خزانے پر ڈاکے کے مترادف ہے، فیصلہ واپس لیا جائے،انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی شروع دن سے کہہ رہی ہے کہ پی ٹی آئی کی حکومت کے الیکٹرک کی انتظامیہ کو مکمل تحفٖظ فراہم کر رہی ہے اور ان کو فرار ہونے کا موقع دینے کی کوشش کی جارہی ہے،کے الیکٹرک جسے مختلف اداروں کے سیکڑوں ارب کے بقایاجات ادا کرنے ہیں وہ سب وفاقی خزانے سے ادا کرنے کا منصوبہ بنایا جارہا ہے،انہوں نے کہاکہ تابش گوہر جب کے الیکٹرک کے سی ای او تھے تو انہوں نے 15پیسے فی یونٹ اضافی چارجزاضافی ملازمین کے نام پر 45ارب روپے وصول کیے اور ملازمین کو بھی نکال دیا، سیاسی ریکوری افسران بھی انہی کے دور میں رکھے گئے اور تیز میٹر بھی انہی کے دور میں لگائے گئے،نیپرا نے 18مہینے کی تحقیقات کے بعد رپورٹ پیش کی جس میں انہوں نے بتایا کہ کے

الیکٹرک کے سی ای او اور ڈائریکٹر زجعلی طریقے سے اوور بلنگ کررہے ہیں۔