نوازشریف بتائیں کہ مودی سے تنہائی میں کیوں ملاقاتیں کیں : شیخ رشید

وفاقی وزیر ریلوے نے لاہور میں ہفتہ وار پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ نواز شریف کی سیاست کا محور صرف اپنی ذات ہے، نواز شریف نے پارٹی کی قیادت سنبھال لی ہے، ن سے ش لیگ نکلے گی لوگ میری باتیں سمجھ نہیں سکے، پاک فوج دنیا کی عظیم فوج ہے، 24 سال سے دہشتگردی کیخلاف لڑ رہی ہے ، آپ نے جونیجو کی پیٹھ پر چھڑا مارا آپ بھول گئے ہیں۔ نواز شریف نے جنرل راحیل کیخلاف بات کی ہے ،کیا آپ نے ان کی خدمات کو سراہتے ہوئے جنرل راحیل شریف کو خط نہیں لکھا ،کیا آپ 4 سال پہلے جھوٹ بول رہے تھے اور ان کی تعریف میں قصیدہ لکھا گیا ۔ کوئی بھی مسلم لیگی فوج کے خلاف نہیں ہوسکتا .
شیخ رشید نے مریم نوازسے 30 سوالات پوچھ لیے، ان کا کہنا تھا کہ مریم کا لحاظ اس لیے ہے کہ وہ خاتون ہیں ،وہ اپنے ہاتھوں سے ان رعایتوں کو کھونا چاہتی ہیں، لوگوں کو بتائیں ان کے چچا پر کیا کیس تھا ،17 ہزار کے ملازم سے 9 ارب کی ٹرانزیکشن کیسے ہوئی ،مریم نوازخاموش کیوں رہیں ؟ مریم بتائیں کہ نواز شریف نے اپنا علاج بیرون ملک کیوں نہیں کرایا، ایک سال 10ماہ تک یہ خاموش بیٹھے رہے، کہتے ہیں این آر او نہیں مانگا لیکن یہ تو بارگین کر رہے تھے میں خدا کو گواہ بنا کر کہتا ہوں ، آپ کو عدالتوں میں صفائی دینا ہو گی۔
شیخ رشید نے سابق وزیراعظم سے سوال کرتے ہوئے کہا کہ نوازشریف بتائیں مودی سے تنہائی میں کیا ملاقاتیں کی ، آپ دوسرے ممالک میں جا کر کیوں مودی اور جندال سے رابطے کرتے تھے ؟ کس طرح آپ جسٹس سجاد کی عدالت میں لاہور سے بسیں بھر کر لے کر گئے آپ نے حملہ کرایا ۔ آپ سی پیک کیخلاف پاکستان میں عدم استحکام کے ایجنڈے پر قائم ہیں ، سی پیک کیخلاف لندن سے بیٹھ کر سازشیں کی جارہی ہیں ۔
وفاقی وزیر نے کہا کہ اس ملک کی اس سے زیادہ کیا توہین ہو سکتی ہے کہ 22 کروڑ عوام کا وزیر اعظم یو اے ای کا ملازم ہو ، یہ نیب کے 38 میں 34 قوانین میں ترامیم چاہتے تھے ،یہ اپنی تاریخ بھول گئے ہیں آپ کو ایکسائز اینڈ ٹیکسائل افسر فوجی جوتوں کے طفیل بنایا گیا ، اپوزیشن آج استعفی دیں کل الیکشن کروائیں گے ۔ ان کاکہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمن کو کہتا ہوں کہ یہ لوگ انہیں استعمال کر رہے ہیں ، وہ اسمبلی حرام نہیں ہوسکتی جس میں مولانا فضل الرحمن نے ووٹ مانگا ۔ یہ خوفزدہ ہیں کہ عمران خان سینیٹ میں اکثریت لے جائے گا ۔

Courtesy gnn news