پہلے گیمز کے کچھ رولز تھے اب کوئی رولز نہیں رہے … انسانی حقوق کی قومی کانفرنس سے مقررین کا خطاب

اسلام آباد میں انسانی حقوق کمیشن آف پاکستان کے زیر اہتمام ایک قومی کانفرنس کا انعقاد عمل میں لایا گیا کانفرنس میں انسانی حقوق کے ساتھ ساتھ آزادی اظہار اور دیگر موضوعات پر اظہار خیال کیا گیا ۔ آئی اے رحمان ۔ غازی صلاح الدین ۔ عاصمہ شیرازی ۔ خوشحال خان اور شہزادہ ذوالفقار سمیت دیگر مقررین نے کھل کر اپنے خیالات کا اظہار کیا غازی صلاح الدین نے کہا کہ ہم بری طرح طوفان میں پھنس چکے ہیں ایسی صورتحال کا سامنا ہم نے ماضی میں پہلے نہیں کیا۔

عاصمہ شیرازی نے کہا کہ آزادی اظہار پر سمجھوتا ہو چکا ہے صحافیوں کو ڈس کریڈٹ کرنے کی روش عام ہے خوشحال خان نے کہا کہ پہلے گیمز کے کچھ رولز تھے اب کوئی رولز نہیں رہے شہزادہ ذوالفقار نے شکوہ کیا کہ بلوچستان کو 24 گھنٹے میں نہ ہونے کے برابر نیوز کوریج ملتی ہے الیکشن کے موقع پر مستونگ دھماکے کی کوریج نہیں کی گئی ۔
مقررین نے اس بات پر زور دیا کہ صحافیوں کی ساکھ پر حملے ہو رہے ہیں سیلف سنسر شپ بڑھ گئی ہے لوگ ردعمل اور نتائج سے خوفزدہ ہیں اس لیے کئی معاملات پر بولنے سے ڈرتے ہیں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں