شہید سورھیہ بادشاہ کو نشان حیدر سے نوازا جائے

شھہید سورھیہ بادشاہ کو نشان حیدر سے نوازا جاے،مہتاب اکبر راشدیبرصغیر کو انگریز کی غلامی سے نجات دلوانے والے سورھیہ بادشاہ کی قربانی کو نصاب میں شامل ہونا چاہیئے،سردار عبد الرحیمسورھیہ بادشاھ کی شخصیت پر مبنی ڈاکیومنٹری کے پریس شو سے مقررین کا خطابکراچی(اسٹاف رپورٹر)پیر صبغت اللہ شاہ راشدی المعروف شہید سورھیہ بادشاہ نے قیام پاکستان کی جدو جہد اور برصغیر سے انگریز سامراج کے خاتمے  کی پاداش میں سولی پر چڑھنا گوارا کیا مگر ظالم حکمرانوں کے سامنے گھٹنے نہیں ٹیکے،یہ بات پاکستان مسلم لیگ فنکشنل کے جنرل سیکریٹری سردار عبد الرحیم نےسورھیہ بادشاہ کی زندگی اور کارناموں کے حوالے سے بننے والی ایک ڈاکیومنٹری کی تقریب اجرا سے خطاب کرتے ہوے کہی انہوں نے مطالبہ کیا کہ سورھیہ بادشاہ کی قربانیوں کو نصاب کا حصہ بنایا جاے اور انہیں قومی ہیرو کا درجہ دیا جاے، آرٹس کونسل کے صدر احمد شاہ نے کہا کہ اس سال میں نے بڑی مشکل سے عابدہ پروین کو سرکاری ایوارڈ دلوایا ہے اور اگلے سال کوشش کروں گا کہ سورھیہ بادشاہ کو بھی ستارہ امتیاز  دلوایا جا سکے، سابق رکن صوبائی اسمبلی اور بیوروکریٹ مہتاب اکبر راشدی نے اس بیان پر ناپسندیدگی کا اظہار کرتے ہوے کہا کہ اول تو عابدہ پروین کو  کسی سفارشی ایوارڈ کی  ضرورت نہیں ہے، پھر سورھیہ بادشاہ کے تاریخی کارنامے اور قربانی اس بات کی متقاضی ہے کہ انہیں حکومت پاکستان نشان حیدر سے نوازاے، تقریب میں شاعروں دانشوروں ادیبوں صحافیوں اور حر جماعت سے وابستہ اکابرین نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔