شادی ہال کھلتے ہی پولیس نے شہریوں سے مال بٹورنا شروع کردیا،

شادی ہال کھلتے ہی پولیس نے شہریوں سے مال بٹورنا شروع کردیا،

گولیمار چورنگی ملا احمد حلوائی کے برابر میں حور لان میں عقیقے کی تقریب،

12 بجے ہال خالی ہونے کے باوجود موبائل پیسے اور کھانا لینے پہنچ گئی،

پولیس موبائل میں اے ایس آئی بھی موجود تھا،

شناختی کارڈ مانگ کر رجسٹرڈ میں اندراج کر کے دباو میں لینے کی کوشش،

ہال خالی ہونے کا بتانے پر افسر کا برس پڑا،

ہم گھنٹے سے کھڑے ہیں، اتنی دیر کیوں لگائی، کہاں سے آئے ہو، شناختی کارڈ دو اندراج ہوگا، اے ایس آئی کا مکالمہ

میڈیا کا تعارف کرانے کے بعد باوجود بھی اہلکاروں نے کھانا مانگا،

اہلکاروں کو بتادیا کہ گاڑی کھانا لے گئی جس پر انہوں نے جانے کی اجازت دی

تعارف کرانے پر ایسا ہوا تو عام آدمی کے ساتھ کیا ہوتا ہوگا، اعلی افسران سے نوٹس لینے کی اپیل ہے، تاکہ ادارہ مزید بدنامی سے بچ سکے