گریڈ ایک سے چار تک کی سرکاری ملازمتیں مقامی سطح پر دی جائیں گی۔ مشیر اطلاعات سندھ

تحریک انصاف نے پچاس لاکھ ملازمتوں کا وعدہ کیا مگر پانچ لاکھ نوکریاں بھی نہیں ملیں۔ بیرسٹر مرتضیٰ وہاب

کرا چی ۔ وزیراعلیٰ سندھ کے مشیر برائے اطلاعات و قانون اور اینٹی کرپشن بیرسٹر مرتضیٰ وہاب نے کہا ہے کہ سندھ حکومت نے ایک سے چا ر گریڈ تک کی سرکاری ملازمتیں مقامی سطح پر جبکہ 5سے 15گریڈ تک کی ملازمتیں ٹیسٹنگ کے ذر یعے دینے کا اصولی فیصلہ کر لیا ہے یہ فیصلہ وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت آج ہونے والے ایک اعلیٰ سطحی اجلا س میں کیا گیا اس با ت کا اظہار انہوں نے سندھ اسمبلی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہو ئے کیا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ اگلے دو روز میں منظوری کے بعد نوکریاں دینے کا آغاز ہوجائے گا انہوں نے وفاقی حکومت پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ تحریک انصاف نے پچاس لاکھ ملازمتوں کا وعدہ کیا مگر پانچ لاکھ بھی نوکریاں نہیں ملیں ادویات کے نرخ تاریخ کی بلند ترین سطح تک پہنچ چکے ہیں۔ تحریک انصاف حکومت نے بدترین مہنگائی کی۔ گیس، بجلی اور گیس کے بعد ادویات مہنگی ہوگئی ہیں۔ وفاق نے ہمیشہ وعدہ خلافی کی اور مہنگائی کا بم گرایا ہے۔ مسیحا بننے والوں نے عوام کی زندگی مشکلات میں ڈال دی ۔ مشیر اطلاعات نے کہا کہ ورلڈ بنک نے رپورٹ میں پاکستان کی معیشت کو مالدیپ اور نیپال سے بھی نیچے گرادیا ورلڈ بنک کی رپورٹ نے آنے والے دو سالوں میں گرتی معیشت کی نشاندھی کی، حکومت کے ہر چیز سے یوٹرن نے عوام کو مشکلات کا شکار بنایا ہے وزیراعظم ہاؤس میں ہونے والی آتشزدگی کے حوالے سے انہو ں نے کہا کہ اب تو وزیراعظم ہاؤس میں بھی آگ لگاکر پچھلے آٹھ ماہ کی رپورٹ کو آگ لگی ہے یہ کونسے اہم راز ہیں جن کو چھپایا گیا ہے ماضی میں بھی غلط بیانی کی گئی اور ٹی وی پر بیٹھ کر الزام لگائے جاتے ہیں۔ آج بھی کچھ وزراء ہمیں تنبیہ کررہے ہیں لیکن اگر وہ آئین کا مطالعہ کریں توبہت کچھ کلیئر ہوجا ئے گا ہمیں ذمہ داری بتانے کے بجائے کابینہ اور وزیر اعظم کو بتایا اور سکھایا جائے تو بہتر ہو گا۔ انہو ں نے کہا کہ وزیر اعظم کا کام الزام لگانا نہیں معیشت کو بھتر کرنا اور عوام کے مسائل حل کرنا ہے ماضی میں بھی کچھ وزراء ایسا کام کرتے تھے ان کو عوام نے رد کیا۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں اس وقت 318 ارب رو پے کا شارٹ فال ہے جو کہ جون تک 480 ارب تک چلاجائے گا۔ یہ کس کی نااہلی ہے کیا اس کا ذمہ دار بھی سندھ کو ٹھرایا جائے گا۔ وفاق اور پنجاب میں شارٹ فال ہے اور سندھ نے 100 فیصد اضافی وصولی کی ہے وزیر صاحب سندھ کو تنبیہ کے بجائے وفاق کو بتائیں کہ ایف بی آر نے سندھ کے سات ارب روپے کی کٹوتی کی جوکہ غلط ہے اور غیرقانونی ہے ہم باربار مطالبہ کرتے ہیں تو جواب نہیں ملتا، ہمیں 120 ارب بھی نہیں دیئے جارہے ہیں، مشیر اطلاعات سندھ مرتضیٰ وہاب نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ حیدرآباد یونیورسٹی کے لئے پیپلز پارٹی کی مخالفت کا الزام درست نہیں ہے حیدر آباد کی سب سے بڑی جامعات حیدرآباد اور مہران یونیورسٹی حیدرآباد میں ہے لیاقت یونیورسٹی سمیت زرعی یونیورسٹی بھی حیدرآباد میں ہیں اور ہم اس اعلان کو خوش آمدید کہتے ہیں۔ مگر یہ سوال پوچھنے پر مجبور ہیں کہ یہ یونیورسٹی ہے کہاں اور کیا آٹھ ماہ قبل وزیراعظم ہاؤس میں اعلان کردہ یونیورسٹی قائم ہوگئی، حیدرآباد اور وزیراعظم ہاؤس کی یونیورسٹیوں کے چارٹر کہاں بنے ہیں سینیٹ اور قومی اسمبلی میں بل پاس ہوا ہے؟ حیدرآباد یونیورسٹی کا تو نوازشریف بھی افتتاح کرچکے ہیں باغ ابن قاسم کا پہلے بھی افتتاح ہوچکا اور عوام کے لیے کھلا ہوا ہے لیکن ان کو تو عادت پڑچکی ہے پرانے منصوبوں کے فیتے کاٹنے کی شاہد خاقان عباسی بھی ایک سو پچیس ارب کا اعلان کرگئے تھے لیکن کہاں ہیں وہ پیسے اب ان لوگوں نے بھی 162 ارب روپے کا صرف اعلان کیا ہے۔ بیرسٹر مر تضیٰ وہا ب نے مطالبہ کیا کہ سندھ کو گیس اور پانی دیا جائے جو ان کا حق ہے انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کا جز پاکستان ہے ہم چھوٹی سوچ پر یقین نہیں رکھتے ضلع تعلقہ کی سوچ نہیں ملک کا ہر شہری ہمارے لئے اہم ہے کراچی میں رہنے والے دیکھیں کیا شاہراہ فیصل، یونیورسٹی روڈ کورنگی، شہید ملت کینٹ کراچی کے ٹھیکیداروں نے بنائی تھی پروپیگنڈا کرنے والوں کا ماضی دیکھیں انہوں نے لوگوں کی حق تلفی کی اسد عمر خوشخبریاں قوم کو بتاتے ہیں چیخوں کی بھی بات ان کی تھیں۔ انہو ں نے کہا کہ خدارا عوام کی چیخیں نکالنے سے یوٹرن لیں عوام کی بہتری کے لئے کچھ کریں۔ ایم کیو ایم کو تحریک انصاف اور انہوں نے ایم کیو ایم کو برا کہا تھا۔ جوہر کے جلسے میں عمران خان نے کراچی کے عوام کو ایم کیو ایم سے نجات دلانے کا وعدہ کیا تھا۔ اب پی ٹی آئی کی یہ اقتدار کی خواہش ثابت ہوچکی ہے اب عمران خان جو کہہ چکے تھے کیا یہ ان کا یوٹرن ہے۔ علا وہ ازیں بیرسٹر مرتضیٰ وہا ب نے ادویا ت کی قیمتوں میں اضافے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ جان بچانے والی ادویات کی قیمتوں میں دو سو فیصد اضافہ ظلم ہے ملکی تاریخ میں پہلی مرتبہ ادویات کی قیمتوں میں چالیس فیصد اضافہ ہوا ہے تحریک انصاف کی حکومت عوام سے جینے کا حق چھین رہی ہے عالمی بینک کی پیشگوئی معیشت کے لئے خطرہ کا الارم ہے اقتصادی ترقی کی شرح میں اضافہ سست روی کا شکار ہے۔نااہل حکمرانوں نے معاشی ضابطہ جاتی ماحول کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا ہے وزیر خارجہ اپنے منصب سے ہٹ کر پیپلزپارٹی پر نکتہ چینی کر رہے ہیں۔ انہو ں نے کہا کہ فروغ نسیم کا ماضی آمروں کی کاسہ لیسی ہے ان کی قانونی موشگافیوں کو پاکستان نے بہت بھگتا ہے انکے کے مشورے آمرانہ حکومت کے لئے اکسیر ہیں۔مرتضیٰٰ وہا ب نے کہا کہ فروغ نسیم نے ہمیشہ غیر جمہوری اقدامات کی حمایت کی پیپلزپارٹی نے ہمیشہ آمریت کا ڈٹ کر مقابلہ کیا ہے تحریک انصاف سندھ کا مینڈیٹ رکھنے والی پارٹی کو دیوار سے نہ لگائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں