کے ایم سی میں ترقیاتی منصوبوں کی بندر بانٹ پر کراچی کے کنٹریکٹرز میں سخت تشویش اور بے چینی پھیل گئی

کراچی (جیوے پاکستان رپورٹ) کے ایم سی افسران کے ساتھ مل کر کئی ارب کے ترقیاتی منصوبے ٹھکانے لگانے کے الزام میں نیب ریڈار پر موجود بااثر ایکسئن روڈز اینڈ ٹرانسپورٹ فضل منگی نے مزید8ترقیاتی کام محکمہ جاتی پول کر کے ٹھکانے لگادیئے،انتہائی دیدہ دلیری کے ساتھ ترقیاتی منصوبوں کی بندر بانٹ پر کراچی کے کنٹریکٹرز میں سخت تشویش اور بے چینی پھیل گئی،بلدیاتی اداروں میں فضل منگی ڈیوالو کے بے تاج بادشاہ کے نام سے جانے جاتے ہیں جن کے ذریعے کے ایم سی افسران نے اربوں روپے کے ترقیاتی فنڈز بوگس این آئی ٹی کر کے ہڑپ کئے ہیں اور میئر کراچی اور کے ایم سی کی جاری تحقیقات میں بھی فضل منگی کو تحقیقات کا سامنا ہے۔انتہائی باوثوق ذرائع کے مطابق قومی احتساب بیورو(نیب) کی جانب سے کرپشن اور بدعنوانیوں کیخلاف کی جانے والی کارروائیوں کے باوجود سرکاری محکموں میں افسران انتہائی دیدہ دلیری کے ساتھ سرکاری فنڈز کی بندر بانٹ میں مصروف ہیں،ذرائع کا کہنا ہے کہ گذشتہ پانچ سالوں میں بلدیہ کراچی کے افسران نے ڈیوالو کے نام پر اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبوں کی بندر بانٹ ہے جس میں اہم کردار محکمہ روڈ اینڈ ٹرانسپورٹ کے ایکسئن فضل منگی اور سندھ حکومت کے محکمہ ایجوکیشن ورکس کے کرپٹ افسران نے انجا م دیا ہے،ذرائع کا کہنا ہے کہ سٹی گورنمنٹ کے کالعدم ہونے کے باوجود کے ایم سی کے فنڈز اور اسکیمیں غیر متعلقہ محکمے سے خفیہ انداز میں ٹینڈرز کراکر ٹھکانے لگائی گئیں جس کے ذریعے کراچی کے اربوں روپے کے فنڈز ہڑپ کئے گئے تھے، ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈیو الو کے نام پر ترقیاتی اسکیمیں بوگس طریقے سے ٹھکانے لگانے میں ایکسئن روڈز اینڈ ٹرانسپورٹ فضل منگی کو اس کا بے تاج بادشاہ قرار دیا جاتا ہے جنہوں نے سب سے زیادہ اسکیمیں اپنے محکمے سے جعلسازی کے ذریعے مبینہ طور پر ٹھکانے لگائی ہیں جن کیخلاف نیب میں اعلی سطحی تحقیقات جاری ہیں اور فضل منگی کے بیانات قلمبند کرنے کے ساتھ ساتھ نیب نے اسکیموں کا ریکارڈ بھی طلب کرر کھا ہے،ذرائع کا کہنا ہے کہ مذکورہ تمام صورتحال کے باوجود محکمہ روڈ اینڈ ٹرانسپورٹ کے ایکسئن کی جانب سے گذشتہ دنوں روڈز کی تعمیر کی8ترقیاتی اسکیموں کیلئے ٹینڈر طلب کئے جس کے دوروزقبل مقررہ وقت کے بعد ٹینڈرز کھولنے کے بجائے ایکسئن نے فضل منگی نے ٹھیکیداروں کے مابین مبینہ طور پر محکمہ جاتی پول کرادیا ،ٹینڈر میں حصہ لینے والے کنٹریکٹرز بشیر مندوخیل کا کہنا ہے کہ ایکسئن فضل منگی کیخلاف کرپشن اور بدعنوانیوں کی لاتعداد شکایات اور نیب میں جاری تحقیقات کے باوجود انہوں نے 8اسکیموں میں سے 3 کام فروخت کرنے کیلئے روک لئے جبکہ بقیہ 5کاموں کا ازخود ہی پول کرادیا ہے،ایم اے کنٹریکشن کے بشیر مندوخیل نے مذکورہ کاموں کی بندر بانٹ پر عدالت عالیہ سے رجوع کرنے کے ساتھ ساتھ تحقیقاتی اداروں سے بھی رجوع کرنے کا اعلان کیا ہے،دوسری طرف شہر کی دیگر کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن نے بھی مذکورہ لوٹ مار پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے فوری کارروائی اور تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے.