بجلی کی تقسیم کار کمپنیاں تمام اہداف حاصل کرنے میں ناکام ۔نیپرا نے رپورٹ جاری کردی

نیپرا کی تازہ رپورٹ نے بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے بلند و بانگ دعوؤں کی قلعی کھول دی ۔تازہ رپورٹ کے مطابق ملک بھر میں بجلی کی تقسیم کار کمپنیاں اپنے تمام اہم اہداف حاصل کرنے میں ناکام رہی ہیں نیپرا نے بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کی پرفارمنس رپورٹ برائے 2018 19 جاری کی ہے رپورٹ کے مطابق نہ تو لائن سروسز کم ہوئے نہ ہی ریکوری بہتر ہوئی بجلی کی تقسیم کار کمپنیاں لوڈشیڈنگ ختم کرنے میں بھی ناکام ثابت ہوئی دعوے کیے گئے تھے کہ بجلی کی پرفارمنس کی گئی ہیں جن کے مثبت نتائج سامنے آئیں گے ریکوری کی حالت بہتر ہو چکی ہے اور لائن لاسز کم ہو چکے ہیں اور بجلی کی چوری بھی رکھ چکی ہے لیکن فنا کی تازہ رپورٹ نے بتایا ہے کہ یہ تمام دعوے کھوکھلے اور جھوٹے ہیں اور حقیقت اس کے برعکس ہے رپورٹ کے مطابق نہ تو لائن وزن میں کمی آئی ہے نہ ریکوری میں بہتری ہوئی ہے نہ لوڈشیڈنگ ختم ہوئی ہے بڑھتے ہوئے لائن نیوز کی وجہ سے اڑتیس ارب روپے کا نقصان ہو چکا ہے جس کو اورسیز کو کے علاوہ تمام کمپنیاں لائن لفظ ختم کرنے میں ناکام رہی ہیں فیسکو حیسکو اور کیسکو کی کارکردگی انتہائی خراب رہی ہے ریکوری کے اہداف پورے نہیں کر پائی ناکافی ریکوری کے باعث قومی خزانے کو 171 ارب روپے کا نقصان ہوا ہے صارفین کو جو نئے کنکشن دینے تھے اس میں بھی غلط بیانی کی گئی ہے پروفیسر بجلی ہونے کے باوجود یہ کمپنیاں لوڈشیڈنگ ختم کرنے میں ناکام رہی ہیں 2018 19 میں بلیوں کو طلب کے مطابق بجلی کا کوٹا فراہم کیا گیا تھا لیکن لفظ کی وجہ سے اور لوڈ مینجمنٹ کے نام پر لوڈ مینجمنٹ کی گئی رپورٹ کے مطابق یہ کمپنیاں صارفین کی شکایات کا ازالہ بھی نہیں کر سکی اور نہ ہی اپنے ملازمین کا تحفظ کر سکی ہیں ۔
رپورٹ میاں شاہد جی این این۔ اسلام آباد