سندھ کے وزیر توانائی امتیاز احمد شیخ نے کہا ہے کہ سندھ کی ہوائی راہداری جھمپیر اور جامشورو میں ہوا سے بجلی پیدا کرنے کے 12 منصوبوں پر تیزی سے کام جاری ہے ان 12 میں سے ہر منصوبہ 50 میگا واٹ بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت کا حامل ہے اور یہ تمام 12 منصوبے اس سال دسمبر تک مکمل ہوجائیں گے اور ان سے مجموعی طور پر 650 میگا واٹ بجلی پیدا ہوگی۔

وزیر توانائی امتیاز احمد شیخ نے کہا ہے کہ سندھ کو قدرت نے بے شمار نعمتوں سے نوازا ہے جن میں سے ایک عظیم نعمت سندھ کی ہوائی راہداری بھی ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہوا سے کوئی ایندھن خرچ کئے اور جلائے بغیر سستی ترین، صاف اور ماحول دوست بجلی پیدا کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سندھ پاکستان میں توانائی کے تمامتر مسائل کو حل کرنے کی صلاحیت کا حامل صوبہ ہے اور سندھ حکومت پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کے وژن کی روشنی میں سندھ کے قدرتی وسائل کو عوام کی بہبود کے لئے استعمال میں لانے کے لئے تندھی سے کام کررہی ہے انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی قیادت میں سندھ حکومت نے تھر میں کوئلے سے بجلی بنانے کے خواب کو نہایت کامیابی کے ساتھ حقیقت کا روپ دیا ہے تھر میں کوئلے سے بجلی پیدا ہورہی ہے اور کوئلے سے بجلی بنانے کے مزید کئی نئے منصوبوں پر کام جاری ہے۔
امتیاز احمد شیخ نے کہا کہ سندھ حکومت وفاقی حکومت کی طرح زبانی دعوے کرنے کے
بجائے عملی اقدامات پر یقین رکھتی ہے اور توانائی کے شعبے میں تھر کول سے بجلی بنالینا اور گھارو، جھمپیر اور جامشورو میں ہوا سے بجلی بنانے کے کامیاب منصوبے اس کی ایک واضح مثال ہیں۔