عاصم سلیم باجوہ وزیراعظم کے معاون خصوصی کے عہدے سے مستعفی

عاصم سلیم باجوہ کا وزیراعظم کے معاون خصوصی کے عہدے سے مستعفی ہونے کا اعلان، چئیرمین سی پیک اتھارٹی کا کہنا ہے کہ اہل خانہ کے ساتھ طویل مشاورت کے بعد فیصلہ کیا کہ صرف ایک عہدہ رکھ کر سی پیک منصوبے پر بھرپور توجہ دوں، اسی لیے معاون خصوصی اطلاعات کا عہدہ چھوڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق چئیرمین سی پیک اتھارٹی عاصم سلیم باجوہ نے نجی ٹی وی چینل کے پروگرام سے گفتگو کرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ وہ وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے اطلاعات کے عہدے سے مستعفی ہو جائیں گے۔
عاصم سلیم باجوہ کا کہنا ہے کہ وہ کبھی بھی معاون خصوصی برائے اطلاعات کا عہدہ قبول نہیں کرنا چاہتے تھے، تاہم وزیراعظم عمران خان کے پرزور اصرار پر عہدہ قبول کیا۔

بطور معاون خصوصی برائے اطلاعات کئی اہم مسائل حل کروائے۔ تاہم اب موجودہ صورتحال میں انہوں نے اپنے اہل خانہ سے طویل مشاورت کی ہے، جس کے بعد وہ اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ معاون خصوصی برائے اطلاعات کا عہدہ چھوڑ دیا جائے۔

وہ اس عہدے سے مستعفی ہو جائیں گے، وزیراعظم سے درخواست کریں گے کہ انہیں اس ذمے داری سے ریلیز کر دیا جائے۔ وہ چاہتے ہیں کہ صرف چئیرمین سی پیک اتھارٹی کا عہدہ اپنے پاس رکھیں۔ ان کی کوشش ہے کہ صرف سی پیک منصوبے پر اپنی توجہ برقرار رکھیں ۔ فیصلہ کیا ہے کہ صرف ایک جانب توجہ مرکوز رہنی چاہیئے، سی پیک اتھارٹی پر کام کرتا رہوں گا۔ عاصم سلیم باجوہ نے اپنی تنخواہ کے حوالے سے بھی کیے جانے والے دعووں کو بے بنیاد قرار دیا۔ ان کا کہنا ہے کہ سی پیک اتھارٹی میں تعیناتی ہوئی تو پروپیگنڈا شروع کر دیا گیا۔ کچھ عناصر کی جانب سے میرے خلاف پروپیگنڈا کیا گیا کہ میری تنخواہ 50 لاکھ ہے۔ عاصم سلیم باجوہ کا کہنا ہے کہ میری سی پیک اتھارٹی میں تنخواہ7لاکھ اور99ہزار روپے ہے