ذاتی طور پر دوبارہ اسکی نگرانی کروں گا۔

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کے ایم سی، کے ڈی اے، واٹر بورڈ، ڈی ایم سی اور سالڈ ویسٹ مینجمنٹ سمیت تمام بلدیاتی اداروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ شہر کے مختلف علاقوں سے برساتی پانی کی جلد سے جلد نکاسی کریں اور مربوط کوششوں اور ہم آہنگی کے ساتھ دائرہ اختیار سے قطع نظر متاثرہ علاقوں کو صاف کریں۔ انھوں نے کہا کہ یہ ہمارا شہر ہے اور ہم سب کو ہم آہنگی اور لگن کے ساتھ مل کر کام کرنا ہو گا اور بغیر کسی تفریق کے لوگوں کی خدمت کرنا ہوگی۔ یہ بات انہوں نے پیر کو وزیراعلیٰ ہاؤس میں ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ اجلاس میں صوبائی وزراء، سعید غنی، ناصر شاہ اور مشیر قانون مرتضی وہاب، وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو، کمشنر کراچی سہیل راجپوت، سیکرٹری ورکس عمران عطا سومرو، اسپیشل سیکرٹری لوکل گورنمنٹ خالد چاچڑ، ایم ڈی سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کاشف گلزار اور کے ایم سی کے میونسپل کمشنرز نے شرکت کی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کمشنر کراچی کو ہدایت کی کہ وہ مختلف بلدیاتی اداروں اور واٹر بورڈ کے ساتھ دستیاب ڈی واٹر مشینوں، پمپوں، سکشن مشینوں جیسی دیگر مشینری کی انوینٹری تیار کریں تاکہ ضرورت کے وقت ان کو منتقل کیا جاسکے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ موسلا دھار بارش کے بعد تمام بلدیاتی اداروں اور واٹر بورڈ، سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ اور صوبائی ڈزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی نے شہر کو بحال کرنے کلئے سخت محنت کی ہے۔ انہوں نے کہا میں نے شہر کے ہر علاقے کا جب وہ پانی سے ڈوبے ہوئے تھے دورہ کیا پھر دوبارہ انکی بحالی کیلئے نگرانی کی اور اسکے بعد پھر بحال ہونے والے علاقوں کا دورہ بھی کیا اور کہا کہ کھارادر کے کچھ حصے ، سرجانی ٹاؤن کے یوسف گوٹھ اور چند گلیوں کو صاف کرایا۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کمشنر کراچی کو رات دیر تک کھارادر کے تمام علاقے کو کلیئر کراکے انھیں رپورٹ کرنے کی ہدایت کی۔ انہوں نے کہا میں چاہتا ہوں کہ اگلے کچھ عرصے میں یوسف گوٹھ پانی سے کلیئر ہوجائے اور میں ذاتی طور پر دوبارہ اسکی نگرانی کروں گا۔ وزیراعلیٰ سندھ نے سکریٹری ورکس عمران عطا سومرو کو ہدایت کی کہ مین کلب روڈ پر واقع سڑکوں کے ان حصوں جوکہ پانی میں ڈوبے ہوئے ہیں اور شاہراہ فیصل سے راشد منہاس روڈ کی جانب مڑنے والا حصہ اور لیاقت آباد کے فلائی اوور کے ایک چھوٹے حصے کی مرمت کی جائے۔ انہوں نے کے ایم سی کو کورنگی کاز وے کی مرمت کرنے کی بھی ہدایت کی اور وزیراعلیٰ سندھ کو بتایا گیا کہ کاز وے کو ٹریفک کلئے بحال کردیا گیا ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے تمام پانی سے ڈوبے ہوئے یا بند علاقوں کو ٹریفک کے لئے کھولنے کی ہدایات جاری کردیں ، اور وہاں سے پانی یا فضلہ کو ٹھکانے لگاکر دوسرے مرحلے میں سڑکوں کی دھلائی کی جائے۔
ڈی ایچ اے:
وزیراعلیٰ سندھ کو بتایا گیا کہ واٹر بورڈ مشینری ابھی بھی ڈی ایچ اے کے فیز VI کے علاقوں کو صاف کرنے کلئے کام کر رہی ہے۔ انہوں نے کمشنر کو ہدایت کی کہ اگر ضرورت پڑے تو زیادہ مشینری لگاکر نکاسی کی جائے۔
کے الیکٹرک:
ایک سوال کے جواب میں وزیراعلیٰ سندھ کو بتایا گیا کہ ڈیفنس ایریا میں کے الیکٹرک کے 12 فیڈر پیر کی سہ پہر سے غیر فعال ہیں، ان میں سے 6 کو آپریشنل کردیا گیا ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے واٹر بورڈ کو ہدایت کی کہ وہ سی بی سی سے بات کریں اور اگر ضرورت ہو تو ان کی مدد کریں۔
میرپورخاص ڈویزن:
وزیراعلیٰ سندھ نے میرپورخاص ڈویژن اور حیدرآباد ڈویژن کے کچھ حصوں میں موسلا دھار بارش کی اطلاع ملنے کے بعد میرپورخاص، عمرکوٹ، تھرپارکر، بدین اور سجاول کے ڈپٹی کمشنرز کو ٹیلیفون کیا اور لوگوں کی دیکھ بھال کرنے کی ہدایت کی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ لوگوں کو نشیبی علاقوں سے محفوظ مقامات پر منتقل کیا جانا چاہئے ساتھ میں کھانا، پانی، دوائیں اور اس طرح کی دیگر اشیا لوگوں کو کیمپوں میں منتقل کرکے انھیں فراہم کریں۔
عاشورا:
وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے اتوار کی صبح کیپری سنیما، ایم اے جناح روڈ سے گارڈن روڈ تک عاشورا جلوس کی قیادت کی۔ انہوں نے ایم اے جناح روڈ تک کے گذرگاہوں کی سیکیورٹی کا جائزہ لیا اور شام کو آئی جی پولیس مشتاق مہر کے ہمراہ جلوس کی فضائی نگرانی کی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے سوک سنٹر کے کمانڈ اینڈ کنٹرول سنٹر کا دورہ کیا جہاں آئی جی سندھ اور ان کی ٹیم نے وزیراعلیٰ سندھ کو جلوس کی نگرانی کے بارے میں بتایا۔ انہوں نے وزیراعلیٰ سندھ کو بتایا کہ انہوں نے چہرے کی شناخت کی خصوصیات والے کیمرے لگائے ہیں۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کھارادر کا دورہ کیا جو بارش کے پانی سے ڈوبا ہوا تھا۔ انھوں نے اپنی موجودگی میں 20 مشینیں لگاکر علاقہ کو صاف کرایا ۔ وزیراعلیٰ سندھ نے خیابانِ شہید کے الیکٹرک مین گرڈ اسٹیشن کا بھی دورہ کیا جہاں بارش کا پانی جمع ہوگیا تھا۔ انھوں نے کے الیکٹرک کے گرڈ اسٹیشن اور ان کے 27 سب اسٹیشنوں کو صاف کرنے کلئے پمپنگ مشینیں فراہم کیں۔ وزیراعلیٰ سندھ نے پورے ڈی ایچ اے فیز IV کے علاقے کا بھی دورہ کیا اور علاقے میں جمع ہوئے پانی کی نکاسی کیلئے سکشن اور پمپنگ مشینیں فراہم کیں۔
عبدالرشید چنا
میڈیا کنسلٹنٹ وزیراعلیٰ سندھ