یونس خان کیلئے ٹیم کے 195 رنز بھی کم

پاکستان کرکٹ ٹیم کے بیٹنگ کنسلٹنٹ یونس خان کو ٹیم کا 195 رنز کا ٹوٹل بھی کم دکھائی دینے لگا اور کہہ دیا کہ اگر رنز کچھ زیادہ ہوتے تو نتیجہ مختلف ہوتا۔

مانچسٹر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بیٹنگ کنسلٹنٹ کا کہنا تھا کہ دو مہینے ہوئے انگلینڈ میں، دن رات کرکٹ کیلئے سوچا اور پریکٹس کی۔

انھوں نے کہا کہ میں نے یہاں بہت کچھ سیکھا، بیٹسمین کے علاوہ بولرز کے ساتھ بھی کام کیا۔

یونس خان کا کہنا تھا کہ پلیئرز کے ساتھ اپنے تجربات شیئر کیے، پلیئرز کو سلپ فیلڈنگ کا بھی بتایا۔
ٹیسٹ میچز میں ٹیم کی کارکردگی پر بات کرتے ہوئے یونس خان کا کہنا تھا کہ شان مسعود نے پہلے ٹیسٹ میں زبردست اننگز کھیلی، آخری ٹیسٹ میں اظہر علی نے اچھا کھیلا۔

یونس خان نے کہا کہ محمد رضوان کی پرفارمنس دیکھ کر سب سے زیادہ خوشی ہوئی، بہت عرصہ بعد انگلینڈ میں کسی وکٹ کیپر بیٹسمین کو اتنا اچھا کھیلتے دیکھا۔

ان کا کہنا تھا کہ کل کے ٹی 20 میں اگر کچھ رنز زیادہ ہوتے تو نتیجہ مختلف ہوسکتا تھا۔

یونس خان نے کہا کہ ہم 195 سے بہتر اسکور کر سکتے تھے، اچھا ہدف دے کر حریف ٹیم پر پریشر ڈال سکتے تھے
واضح رہے کہ انگلینڈ نے سیریز کے دوسرے ٹی ٹوئنٹی میچ میں 5 وکٹوں سے باآسانی شکست دیدی تھی۔

قومی ٹیم نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے محمد حفیظ کے 69 اور بابر اعظم کے 56 رنز کی بدولت میزبان ٹیم کو 196 رنز کا ہدف دیا۔

تاہم کپتان این مورگن، ڈیوڈ ملان اور جونی بیئرسٹو کی دھواں دار بیٹنگ کی بدولت آخری اوور میں انگلش ٹیم نے یہ بڑا ہدف بھی عبور کرلیا۔

اس جیت کے ساتھ ہی اگلینڈ کو سیریز میں 0-1 کی برتری حاصل ہوگئی ہے جبکہ سیریز کا ایک میچ ابھی باقی ہے