نواب محمد یوسف تالپور کی تجویز پر گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر نے سندھ میں حالیہ بارشوں سے متاثرہ اضلاع کے قرضوں کی وصولی موخر کرنے اور موجودہ قرضوں پر مارک اپ ختم کرنے کی یقین دھانی کرادی۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے رکن قومی اسمبلی نواب محمد یوسف تالپور کی تجویز پر گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر نے سندھ میں حالیہ بارشوں سے متاثرہ اضلاع کے قرضوں کی وصولی موخر کرنے اور موجودہ قرضوں پر مارک اپ ختم کرنے کی یقین دھانی کرادی۔ تفصیلات کے مطابق اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی زیر صدارت قومی اسمبلی کی خصوصی کمیٹی برائے زراعت کا اجلاس ہوا، اجلاس میں وزیر خوراک و غذائی تحفظ فخر امام، اور گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر سمیت کمیٹی کے دیگر ممبران نے شرکت کی۔ اجلاس میں نواب محمد یوسف تالپور نے تجویز پیش کرتے ہوئے کہا کہ حالیہ بارشوں نے سندھ میں شدید تباہی مچائی ہے، جس کے نتیجے میں فصلیں تباہ ہوچکی ہیں اور کاشت کار شدید مشکلات کا شکار ہیں۔ نواب محمد یوسف تالپور نے کہا کہ میرپور خاص، تھر پارکر، حیدرآباد، ٹھٹہ، بدین، بالخصوص عمر کوٹ سمیت سندھ کے وہ اضلاع جو حالیہ بارشوں سے شدید متاثر ہوئے ہیں، میں کسانوں کو دیئے گئے قرضے معاف کر دیئے جائیں اور فصلوں کی دوبارہ کاشت کے لئے کسانوں کو مزید قرضے فراہم کئے جائیں۔ گورنر اسٹیٹ بینک نے نواب محمد یوسف تالپور کی تجاویز پر عملدرآمد کی یقین دہانی کراتے ہوئےکہا کہ کمیٹی کی جانب سے متعین کردہ اضلاع میں قرضوں کی وصولی موخر کرنے اور مارک اپ کے خاتمے کے لئے اقدامات کئے جائیں گے۔ میں کوشش کروں گا کہ کمرشل بینکوں سے رابطہ کرکے قرضوں کے معاملات کو جلد از جلد حل کر دیا جائے۔ انہوں نے یقین دلایا کہ حالیہ بارشوں سے شدید متاثر ہونے والے اضلاع میں قرضوں کی وصولی موخر کرنے، مارک اپ ختم کرنے اور نئے قرضوں کے اجراء کے لیے تجارتی بینکوں اور اے ڈی پیز بینکوں کے ساتھ مل کر جلد پالیسی بنائیں گے۔