اگر ہم پیسے نہیں دے رہے تھے تو سلمیٰ ظفر نے 7 برس تک ہمارے ساتھ کیوں کام کیا؟

سینئر اداکارہ سلمیٰ ظفر نے اداکارہ جویریہ سعود پر ایک اور الزام لگاتے ہوئے کہا کہ’او ماں‘ گانا اُن کا اسکرپٹ تھا جو ماؤں کے عالمی دن پر چلایا گیا تھا، یہ اسکرپٹ انہوں نے فیسٹیول کے لیے رکھا تھا لیکن انہیں دے دیا تھا، جس کا کریڈٹ جویریہ سعود نے انہیں نہیں دیا۔

اداکارہ سلمیٰ ظفر نے مزید کہا کہ تحریر میں کہیں بھی مجھے کریڈٹ نہیں دیا گیا بلکہ لکھاری کے طور پر بھی جویریہ سعود کا نام موجود تھا۔

یاد رہے کہ گزشتہ ماہ سینئر اداکارہ سلمیٰ ظفر نے اداکارہ جویریہ اور ان کے شوہر سعود پر ایک کروڑ روپے ہڑپ کرنے کے الزامات عائد کیے تھے۔

سوشل میڈیا پر سینئر اداکارہ سلمیٰ ظفر کی ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں انہوں نے اداکار سعود اور ان کی اہلیہ اداکارہ جویریہ سعود پر سنگین الزامات عائد کرتے ہوئے دعویٰ کیا تھا کہ وہ ان کے ایک کروڑ جبکہ عام ملازمین کے بھی ہزاروں روپے کھا گئے ہیں۔

اداکارہ نے الزام عائد کیا تھا کہ جویریہ اور سعود نے ماہانہ 7 ہزار روپے کی تنخواہ پر کام کرنے والے ملازمین کو بھی تنخواہیں ادا نہیں کیں جبکہ یومیہ اُجرت پر کام کرنے والے مزدوروں کو 10 روز کے کام کے بدلے 4 دن کے پیسے دیے۔

جس کے بعد جویریہ سعود نےان الزامات کا جواب دیتے ہوئے کہا تھا کہ ہم نے ان کے پیسے بہت سال پہلے ہی کلیئر کر دیے تھے اور اگر ہم پیسے نہیں دے رہے تھے تو سلمیٰ ظفر نے 7 برس تک ہمارے ساتھ کیوں کام کیا؟

بعدازاں انہوں نے اپنی انسٹاگرام پوسٹ میں بتایا تھا کہ وہ اور اُن کے شوہر اداکار سعود، اداکارہ سلمیٰ ظفر کے خلاف قانونی کارروائی کرنے جا رہے ہیں۔

اداکارہ نے اپنی پوسٹ میں بتایا تھا کہ ان کا پروڈکشن ہاؤس اداکارہ سلمیٰ ظفر کے خلاف جھوٹے الزامات لگانے پر قانونی کارروائی کرے گا۔

جس کے بعد اداکارہ شیری شاہ نےبھی انسٹاگرام پر تقریباً 10 منٹ دوانیے کی ویڈیو میں دعویٰ کیا تھا کہ جویریہ اور سعود نے اُن کےبھی 90 لاکھ روپے دینے تھے اور اُنہیں محض 10 لاکھ روپے ہی ادا کیے گئے
jang-report