19 ہزار ملازمین فارغ کرنے کا فیصلہ

واشنگٹن: امریکی ہوائی کمپنیوں نے اکتوبر تک 19 ہزار ملازمین کو فارغ کرنے کا فیصلہ کر لیا۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق امریکی ہوائی کمپنیاں کورونا لاک ڈاؤن کی کاری ضرب کو نہ سہہ سکیں اور معاشی مشکلات کے باعث فضائی کمپنیاں بڑا فیصلہ کرنے پر مجبور ہو گئیں۔

ڈیلٹا ائر لائن نے اپنی 19 ہزار 500 ملازمتیں ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ دیوالیہ ہونے سے بچنے کے لیے امریکی فضائی کمپنیوں نے حکومت سے امداد کی اپیل بھی کر دی ہے۔

امریکی فضائی کمپنی یونائیٹڈ ائیر لائنز اپنے 30 فیصد افسران کو فارغ کرے گی۔ یونائیٹڈ ائرلائنز انتظامیہ کا کہنا تھا کہ کمپنی 3 ہزار 450 ملازمین کو برطرف کر دے گی جب کہ 12 ہزار 250 پائلٹوں کو بھی جلد نکال دیا جائے گا۔

واضح رہے کہ کورونا وائرس سے دنیا بھر کی معیشت متاثر ہوئی ہے اور لاکھوں افراد بے روزگار ہو گئے ہیں جن میں امریکی تاریخ میں ریکارڈ تعداد میں لوگ بیروزگار ہوئے ہیں۔

کورونا وائرس نے جہاں پوری دنیا کے افراد کی صحت کو متاثر کیا وہیں امریکہ، برطانیہ سمیت کئی ممالک میں بے روزگاری میں بھی بے تحاشہ اضافہ ہو گیا۔

یہ بھی پڑھیں: صدارتی انتخابات: صدر ٹرمپ کا امریکیوں سے ایک کروڑ نوکریوں کا وعدہ

دنیا کی مضبوط ترین معیشت رکھنے والے ملک امریکہ میں بھی بے روزگاری اپنی انتہا کو پہنچ چکی ہے اور عوام لاک ڈاؤن کے باوجود حکومت کے خلاف مظاہرے کرنے پر مجبور ہو گئے ہیں۔

امریکہ میں کورونا نے شعبہ سیاحت سے وابستہ لوگوں سے بھی روز گار چھین لیا ہے اور اب تک اسی لاکھ امریکی بے روزگار ہو چکے ہیں۔

فوربز رپورٹ کے مطابق امریکہ کا شعبہ ہوا بازی کورونا وائرس کے سبب شدید متاثر ہوا ہے اور رواں ماہ کے آخر تک 314 ارب ڈالر کا نقصان متوقع ہے۔

امریکہ میں لاک ڈاون کے باعث بڑھتی ہوئی بے روزگاری سے شہریوں کی بے چینی میں بھی مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔