حیدرآباد میں ایک سو پانچ ملی میٹر ریکارڈ بارش ہوئی۔ بارش کے باعث نشیبی علاقے تالاب کا منظر پیش کرنے لگے

حیدرآباد میں وقفے وقفے سے بارش کا سلسلہ جاری ہے جس کے باعث نشیبی علاقوں میں پانی جمع ہوگیا ہے۔

حیدرآباد میں ایک سو پانچ ملی میٹر ریکارڈ بارش ہوئی۔ بارش کے باعث نشیبی علاقے تالاب کا منظر پیش کرنے لگے۔ شہباز بلڈنگ اور سوک سینٹر میں بارش کا پانی جمع ہوگیا۔ شہر میں کل شام سے وقفے وقفے سے بارش کا سلسلہ جاری ہے جس کے باعث حیدرآباد ، ٹھٹھہ اور بدین میں بھی اربن فلڈنگ کا خطرہ ہے۔

سندھ میں طوفانی بارشوں سے ریلوے کا نظام بھی متاثر ہوا ہے۔ کراچی سے حیدر آباد کے درمیان ٹریک کا کچھ حصہ بارش کے پانی میں بہہ گیا ہے۔ ٹریک متاثر ہونے سے اپ اور ڈاؤن دونوں ٹریکس بلاک کرکے ٹرین آپریشن معطل کر دیا گیا ہے۔

عوامی ایکسپریس کو کراچی سے جانے سے روک دیا گیا اور فرید ایکسپریس کو بولہاری کے مقام پر روک دیا گیا
کراچی جانے والی رحمان بابا ایکسپریس کو بن قاسم کے مقام پر روک دیا گیا ہے۔ کراچی آنے والی گرین لائن ایکسپریس کو پڈعیدن اسٹیشن پر روکا گیا ہے۔

ٹریک کی بحالی کا کام شروع نہیں ہوسکا جس کے باعث مسافروں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ این ڈی ایم انے شہرمیں دوبارہ اربن فلڈنگ کا خدشہ بھی ظاہر کیا ہے۔

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں بھی صبح سویرے گرج چمک کے ساتھ تیز بارش ہوئی۔ محکمہ موسمیات کی جانب سے مزید بارشوں کی پیش گوئی بھی کی گئی ہے۔