تھرپارکر میں خودکشیاں روکنے کی عملی کوششیں

صحرائے تھر میں خودکشیوں کے بڑھتے رجحان کو روکنے کےلیے عملی کوششیں سامنے آگئیں۔

خودکشیوں کو روکنے کےلیے سرکاری اور سماجی ادارے ایک ہوگئے، اس حوالے سے نفسیاتی ماہرین کی خدمات لینے کے لیے معاہدہ طے پاگیا۔

ڈپٹی کمشنر آفس میں طے پانی والے اس معاہدے کی نگرانی سندھ مینٹل ہیلتھ اتھارٹی کرے گی

معاہدے میں طے پایا ہے کہ مریضوں کو ایک فاصلاتی نظام کے ذریعے نفسیاتی ماہرین سے جوڑا جائےگا، انہیں طبی سہولیات اور دوائیں دی جائیں گی۔

سرکاری اور سماجی ادارے کے درمیان طے پانے والے معاہدے کے تحت موبائل ایپلی کیشن بھی بنائی جائے گی۔

تاہم سماجی حلقوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ ان اقدامات سمیت خودکشی اور قتل کے فرق کو واضح کرنا بھی ضروری ہے۔

واضح رہے کہ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق سال رواں کے دوران 60 سے زائد افراد نے مختلف وجوہات کے باعث خودکشیاں کی ہیں جبکہ غیر سرکاری اعداد و شمار اس سے دُگنا ہیں
jang-report