سرمایہ کاری و صنعتکاری کے فروغ کےلئے بجلی و گیس کی قیمتوں کو عالمی سطح پر رکھا جائے ۔ تاجر اور عوام سیاسی کشیدگی اور مہنگائی سے پریشان ہیں ۔ اسٹیل ملز اور دیگر ناکام اداروں کی نجکاری موخر کی جائے ۔ میاں زاہد حسین

پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فور م وآل کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر ، ایف پی سی سی آئی میں بزنس مین پینل کے سینئر وائس چیئرمین اور سابق صوبائی وزیر میاں زاہد حسین نے کہا ہے برآمدات میں کچھ اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے مگر سرمایہ کاروں اور صارفین کا اعتماد ابھی بحال نہیں ہوا ہے جس کےلئے حکومت کو اقدامات کرنے کی ضرورت ہے ۔ ابھی تک بہت سے کاروبار سپلائی چین میں بار بار خلل واقع ہونے سے پریشان ہیں ، طلب میں کمی اور دیگر عوامل کی وجہ سے انکی پیداوار اور آمدنی کم ہو چکی ہے جبکہ عوام اور تاجر آسمان سے باتیں کرتی مہنگائی سے پریشان ہیں اور انکی بے چینی بڑھ رہی ہے ۔ میاں زاہد حسین نے بزنس کمیونٹی سے گفتگو میں کہا کہ وائرس سے پیدا ہونے والی بے یقینی کو سیاسی عدم استحکام مزید بڑھا رہا ہے اور ایسے حالات میں سرمایہ کاروں اور عوام کے اعتماد کی بحالی ایک چیلنج ہو گا کیونکہ اسکی وجہ سے سرمایہ کاری نہیں ہو رہی ہے ۔ متعدد اہم ممالک کی تجارتی پالیسیوں میں مسلسل تبدیلی، تحفظ پسندی کے بڑھتے ہوئے رجحان، غیر ملکی سرمایہ کاروں کے منافع میں کمی اور دیگر عوامل نے بھی ملکی و غیر ملکی سرمایہ کاروں کو پریشان کر رکھا ہے ۔ 2019 میں مختلف ممالک میں ڈیڑھ کھرب ڈالر کی غیر ملکی سرمایہ کاری ہوئی تھی جبکہ وائرس کے بعد اس میں چالیس فیصد تک کی زبردست کمی دیکھنے میں آئی ہے جس سے ترقی پذیر ممالک زیادہ متاثر ہو رہے ہیں جو پہلے ہی پیداوار، برآمدات اور ترسیلات میں کمی کا مقابلہ کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں ۔ کئی ممالک کا کرنٹ اکاءونٹ متوازن نہیں رہا ہے اور انکے دیوالیہ ہونے کا خطرہ بڑھتا جا رہا ہے جبکہ سرمایہ کار نجکاری میں بھی دلچسپی نہیں لے رہے ہیں ۔ ان حالات میں پاکستان اسٹیل ملز اور دیگر سفید ہاتھیوں کی فروخت کے منصوبے کو وقتی طور پر موخر کرنا ضروری ہو گیا ہے جبکہ صورتحال معمول پر آنے تک ان اداروں میں اصلاحات کی جا سکتی ہیں جبکہ قوانین کو بھی بہتر بنایا جا سکتا ہے جس سے سرمایہ کاروں کی دلچسپی بڑھے گی ۔ انھوں نے کہا کہ حکومت مافیاءوں کو لگام ڈالے، سیاسی اور معاشی استحکام کو یقینی بنائے، کاروبار دوست قوانین بنائے، ریگولیٹرز کی کمزوریاں دور کرے اور پالیسیوں کا تسلسل یقینی بنائے تاکہ سرمایہ کار پاکستان میں اپنا سرمایہ لگائیں ۔ اس سلسلے میں بجلی اور گیس کی بلا تعطل فراہمی اور ان کی قیمتوں کو عالمی سطح پر رکھنا انتہائی ضروری ہو گا ۔

میاں زاہد حسین سابق وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنا لوجی ، سند ھصدرپاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فورم (پی بی آئی ایف )سینیئر وائس چیئرمین بزنس مین پینل(بی ایم پی)صدرآل کراچی انڈسٹریل الائنس (اے کے آئی اے) َچیئر مین آل پاکستان لبر یکنٹس مینو فیکچررز ایسو سی ایشن (ایپلما)سابق چیئرمین کورنگی ایسو سی ایشن آف ٹریڈ اینڈ انڈسٹری (کاٹی)