پنجاب حکومت نے کاروبار کے لیے اوقات کار کی پابندی ختم کر دی-ساتوں دن 24 گھنٹے کام کر سکیں گے

پنجاب حکومت نے کاروبار کے لیے اوقات کار کی پابندی ختم کر دی۔تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت نے فیکٹریوں صنعتی یونٹس اور کنسٹرکشن انڈسٹری سے وابستہ کاروبار کے لیے اوقات کار کی پابندی ختم کر دی۔پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر ڈیپارٹمنٹ پنجاب نے نوٹیفیکیشن جاری کردیا ہے جس کے مطابق پنجاب بھر میں فیکٹریاں اور صنعتی یونٹس ایس او پیز کے ساتھ ہفتے کے ساتوں دن چوبیس گھنٹے کام کر سکیں گے۔
جبکہ کنسٹرکشن سیکٹر اور اس سے جڑے کاروبار وغیرہ بھی کورونا ایس او پیز کو یقینی بنا کر ہفتے کے سات دن چوبیس گھنٹے کام جاری رکھ سکیں گے۔دوسری جانب صوبائی وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت کی جانب سے این سی او سی اور وفاقی حکومت کو مجوزہ ایس او پیز کے تحت کاروبار کھولنے کے حوالے سے سفارشات تیار کر لی گئی ہیں،حکومت میرج ہالز، ریسٹورنٹس، بزنس سنٹرز، سیاحتی مقامات، سپورٹس کلبز، تفریحی پارکس، سینما ہالز اور تھیٹرز کھولنے کے لیے وفاقی حکومت سے اجازت طلب کرے گی۔
وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی زیر صدارت کابینہ کمیٹی برائے انسدادِ کرونا کی جانب سے نیگیٹو لسٹ میں شامل کاروبار کھولنے کے حوالے سے اجلاس کی تفصیلات بتاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مندرجہ بالا کاروبار کھولنے سے متعلق حتمی فیصلہ این سی او سی سے منظوری کے بعد کیا جائے گا۔قبل ازیں اپنے آفس سے جاری کیے گئے ایک بیان میں وزیر اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ انسدادِ کورونا کیلئے پنجاب حکومت کے مثبت اقدامات کو سپریم کورٹ کے معزز بنچ نے از خود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران بھی سراہا ہے۔ معزز بنچ نے کہا کہ بزدار حکومت کے کرونا مخالف اقدامات مثبت اور درست سمت میں ہیں- بزدار حکومت کرونا میں واضح کمی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے معاشی سرگرمیاں تیز کرنا چاہتی ہے