سابق حکومت نے پانچ سالوں میں 30 ارب ڈالر بیرونی قرضہ واپس کیا پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے اعداد و شمار قومی اسمبلی میں جاری

سابق حکومت نے پانچ سالوں میں 30 ارب ڈالر بیرونی قرضہ واپس کیا پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے اعداد و شمار قومی اسمبلی میں جاری کر دیئے

سینیٹ میں حکومتی وزیر حماد اظہر کی پیش کردہ رپورٹ.
تفصیل چیک کریں اور پی ٹی آئی وزراء کے معاشی ایشوز ہر ٹی وی شو میں پیش کردہ جھوٹ سے بھی موازنہ کریں.

پاکستان کی پارلیمنٹ کے ایوان بالا کو بتایا گیا ہے کہ موجودہ حکومت نے پانچ سال میں 37 ارب ڈالرز بیرونی قرضہ واپس کرنا ہے جبکہ سابقہ حکومت نے پانچ سال میں تقریباً 30 ارب ڈالرز قرضہ واپس کیا۔*
ایوان کو بتایا گیا ہے کہ جنوری 2019 تک پاکستان کے غیر ملکی قرضوں کا حجم 88 ارب ڈالرز سے زیادہ ہے ۔

خیال رہے کہ تحریک انصاف کی حکومت جب سے اقتدار میں آئی ہے یہ بتا رہی ہے کہ اس نے بہت قرضہ واپس کرنا ہے جبکہ حقیقیت میں ماضی کی حکومتوں نے بھی اربوں ڈالرز قرضہ واپس کیا۔
پاکستان تحریک انصاف کی حکومت ہمیشہ یہ شو کرتی رہی ہے کہ پچھلی حکومت نے صرف قرضہ لیا ہے واپس کچھ نہیں کیا اب پچھلی حکومت کا قرضہ ان کو واپس کرنا پڑے گا لیکن حقیقت پارلیمنٹ ہاؤس میں کھل گئی جو کہ حکومتی وزیر حماد اظہر نے ہی پیش کی
وزرات خزانہ نے سینیٹ کو بتایا ہے کہ پاکستان نے مالی سال 2013/14 سے جنوری 2019 تک 33 ارب 50 کروڑ 69 لاکھ ڈالرز قرضہ واپس کیا ۔ لوٹائے گئے قرضے میں 7 ارب 30 کروڑ ڈالرز سود شامل ہے ۔ جنوری 2019 تک پاکستان پر 88 ارب 19 کروڑ ڈالرز کے غیر ملکی قرضے ہیں ۔

وزیر مملکت خزانہ حماد اظہر نے سینیٹ میں بیان دیا کہ اس سال حکومت کو 9.2 ارب ڈالرز قرضہ واپس کرنا ہے ۔

وزارت خزانہ نے سینیٹ کو تحریری جواب میں بتایا کہ پاکستان کے لوٹائے گئے قرض کی اصل رقم 26 ارب 18 کروڑ 18 لاکھ ڈالرز تھی۔
پاکستان نے 2013/14 میں 79 کروڑ، 97 لاکھ ڈالرز سود سمیت 6 ارب 90 کروڑ 89 لاکھ ڈالرز قرضہ واپس کیا ۔

سنہ 2014/15 میں 99 کروڑ 51 لاکھ ڈالرز سود سمیت 5 ارب 4 کروڑ 72 لاکھ ڈالرز قرضہ واپس کیا ۔2015/16 میں 1ارب 14 کروڑ 25 لاکھ سود سمیت 4 ارب 45 کروڑ ڈالرز قرضہ واپس کیا۔ 2016/17 کے دوران 1ارب 32 کروڑ 81 لاکھ ڈالرز سود سمیت 6 ارب 52 کروڑ 38 لاکھ ڈالرز ، 2017/18 کے دوران 1 ارب 76 کروڑ 43 لاکھ ڈالرز سود سمیت 6 ارب 2 کروڑ 52 لاکھ ڈالرز قرضہ واپس کیا
پاکستان نے مالی سال 2018/19 میں جنوری 2019 تک 1ارب 29 کروڑ 52 لاکھ ڈالرز سود سمیت 4 ارب 55 کروڑ 15 لاکھ ڈالرز قرضہ واپس کیا ۔

آج تک پاکستان تحریک انصاف کی لیڈر شپ اور پاکستان تحریک انصاف کے سپوٹر اور سوشل میڈیا ایکٹیوسٹ یہ الزام لگاتے رہے ہیں کہ پچھلی حکومتوں نے صرف قرضہ لیا ہے جو کہ عمران خان کی حکومت میں واپس کرنا ہے ہے اس جھوٹ کو پاکستان تحریک انصاف کے ہی وزیر حماد اظہر نے قومی اسمبلی نے میں میں ڈاکومنٹ پیش کرکے بے نقاب کر دیا
*اور جو قرضہ نہ لینے کا ارادہ کرکے آئے تھے اور جو کہتے تھے کہ ہم قرضہ نہیں لیں گے بلکہ خود کشی کرلیں گے انہوں نے 70 سالوں کا ریکارڈ توڑ دیا.