سعودی حکومت کا غیر ملکیوں کے کاروبار کے حوالے سے اہم فیصلہ

خلیجی ریاست سعودی عرب کی مجلس شوریٰ کا اجلاس منعقد ہوا جس میں شوریٰ نے وزارت نے تجارت کو انسداد جعلسازی نظام میں موجود خامیاں دور کرنے کی ہدایات کردیں۔

رکن شوری خالد العقیل نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اجلاس سے متعلق بتایا کہ موجودہ نظام تجارتی سرگرمیوں میں ملاوٹ کے رواج پر قابو پانے میں کارآمد نہیں ہے، 2018 میں ایک ارب ریال مالیت کی لاکھوں ملاوٹی اشیا ضبط کی گئی ہیں جو خطرناک علامت ہے۔

خاتون رکن شوری رائدہ ابونیان نے کہا کہ بین الاقوامی تجارت کے حوالے سے قانون جلد از جلد جاری کیا جائے۔ ایسا ہوگا تب ہی بین الاقوامی تجارت سے مقامی صنعتوں کو پہنچنے والے نقصان سے بچایا جاسکے گا۔

ایک اور رکن شوریٰ کا کہنا تھا کہ وزارت تجارت سعودی شہریوں کے نام سے چلنے والے غیر ملکیوں کے کاروبار کے خاتمے سے متعلق کام کریں اور اس کا فوری حل پیش کریں

Courtesy ary news