بھارتی پولیس شاہ رخ خان کے فلمی ڈائیلاگ کی مدد سے سماجی فاصلہ سمجھانے لگی

بھارتی پولیس نے اپنے عوام کو عالمگیر وبا کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے سماجی فاصلہ برقرار رکھنے سے متعلق آگاہی کے لیے شاہ رخ خان کی فلم سے مدد لے لی۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق ریاست آسام کی پولیس نے اپنے سماجی رابطے کی ویب سائٹ کے اکاؤنٹ پر ایک دلچسپ میسج جاری کردیا ہے۔

پولیس نے لیجنڈی اداکار شاہ رخ خان کی 1990 کے عشرے کی ایک فلم ’بازیگر‘ کا ایک ڈائیلاگ ٹوئٹ کیا۔

ڈائیلاگ کو تھوڑا سا تبدیل کرتے ہوئے پولیس نے لکھا کہ ’کبھی کبھی پاس آنے کے لیے کچھ دور جانا پڑتا ہے، اور دور جا کر پاس آنے والے کو بازیگر کہتے ہیں۔‘

آسام پولیس نے اپنے پیغام میں شاہ رخ خان کے مخصوص انداز میں ان کی ایک تصویر بھی شیئر کی جس میں کمپیوٹر ایڈیٹنگ کی مدد سے ان کے چہرے پر ماسک پہنایا گیا تھا۔
اس تصویر میں شاہ رخ خان کے دونوں بازوں کھلے ہوئے تھے، ان کے دونوں ہاتھوں کی لمبائی کو 6 فٹ کے سماجی فاصلے کی نشاندہی کے لیے استعمال کیا گیا ہے۔

شاہ رخ خان کی تھرلر فلم بازیگر 1993 میں ریلیز ہوئی جس کے مرکزی کردار شاہ رخ خان، کاجول اور شلپا شیٹھی نے نبھائے۔

اداکار، ڈائیلاگ اور موسیقی کی وجہ سے اس فلم کو پذیرائی حاصل ہوئی جبکہ اس فلم کے ٹائٹل ڈائیلاگ کو بھی غیر معمولی شہرت ملی۔

اس فلم کے ایک سین میں کردار اجے شرما (شاہ رخ خان) ایک ریس جان بوجھ کر ہار جاتا ہے۔

اس شکت کے بعد وہ یہی کہتا ہے کہ ’کبھی کبھی جیتنے کے لیے ہارنا بھی پڑتا ہے، اور ہار کر جیتنے والے کو بازیگر کہتے ہیں