رکن پارلیمنٹ کے علاوہ کسی عہدے کیلئے دوہری شہریت کی پابندی نہیں : وزیرخارجہ

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے دہری شہریت کے معاملے پر موقف دیتے ہوئے کہا ہے کہ اثاثے ظاہر کرنے کی روایت پی ٹی آئی نے ڈالی ہے ، دیکھنا یہ ہےکہ قانون اورآئین دوہری شہریت کے معاملے پرکیا کہتا ہے۔ دوہری شہریت کی پابندی صرف قومی اسمبلی اورسینیٹ کے رکن کیلئے ہے، دیگر کسی عہدے سے متعلق دوہری شہریت کی کوئی قدغن نہیں ۔ شاہ محمود قریشی نے مزید کہا کہ مفادات ٹکراؤ سے بچنے کیلئے واضح پالیسی کسی نے نہیں اپنائی، میری رائے میں عوام کے منتخب نمائندوں کی حیثیت افضل ہوتی ہے، امورسلطنت کیلئےمختلف شعبہ جات کےماہرین کی بھی ضرورت ہوتی ہے۔
واضح رہے کہ حال ہی میں وزیراعظم کے معاونین خصوصی کے دُہری شہریت کے حامل ہونے کا معاملہ سامنے آیا ہے جس کی تفصیلات کابینہ ڈویژن کے ذرائع کے حوالے سے منظر عام پر آئی ہیں ۔ کابینہ ڈویژن کے مطابق وزیر اعظم کے 15 میں سے 7 مشیر دوہری شہریت کے حامل ہیں ۔ کابینہ ڈویژن کے مطابق وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے ڈیجیٹل پاکستان تانیہ ایدروس کے پاس کینیڈا اور سنگاپور کی شہریت ہے۔ معاون خصوصی نیشنل سیکورٹی ڈویژن معید یوسف اور معاون خصوصی پٹرولیم ندیم بابر امریکی شہریت جبکہ معاون خصوصی پارلیمانی کوآرڈینشن ندیم افضل چن کی بھی دوہری شہریت رکھتے ہیں ۔ ندیم افضل چن کے پاس کینڈین شہریت ہے، معاون خصوصی اورسیز زلفی بخاری برطانوی شہریت رکھتے ہیں،معاون خصوصی سیاسی روابط شہباز گل امریکی گرین کارڈ ہولڈر نکلے ہیں ۔