ملک کے چاروں صوبوں میں ٹیلی میٹرسسٹم جلد ازجلد نافذ کرنے کا فیصلہ

کراچی (                   ) ملک کے چاروں صوبوں میں ٹیلی میٹرسسٹم جلد ازجلد نافذ کرنے کا فیصلہ، جس سے چاروں صوبوں میں استعمال ہونے والے پانی کے اعداد و شمار حاصل ہوسکیں گے، اور صوبوں کے مابین پانی سے متعلق تنازعہ کا بھی خاتمہ ہوگا، یہ فیصلہ گذشتہ روز قومی اسمبلی کی اسٹینڈنگ کمیٹی برائے واٹر ریسورسز کمیٹی میں طے ہوا۔ متعلقہ کمیٹی کا اجلاس کمیٹی کے چیئرمین نواب یوسف تالپور کی زیر صدارت ویڈیو کانفرنس کے منعقد ہوا۔ اجلاس میں اسٹنڈنگ کمیٹی میں قومی اسمبلی کے 21 ممبران میں سے 7ممبران  سمیت ارسا (IRSA)کے چاروں صوبوں کے نمائندگان نے بھی شرکت کی۔ اجلاس میں طے کیا گیا کہ منٹس کی منظوری کیلئے ڈرافٹ آئندہ اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔ اجلاس میں ممبر قومی اسمبلی مریم اورنگزیب نے تجویز دی کہ سی سی آئی کی کمیٹی تشکیل دی جائے جو معاملات کو افہام و تفہیم سے طے کرے، جسے کمیٹی کے چیئرمین نے منظور کرتے ہوئے فوری طور پر سیکریٹری واٹر ریسورسزکو متعلقہ کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت کی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ملک کے چاروں صوبوں میں ٹیلی میٹر سسٹم جلد ازجلد نافذ کیا جائے تاکہ چاروں صوبوں کو معلوم ہو کہ کون سا صوبہ کتنا پانی استعمال کررہا ہے۔ اس سلسلے میں سی سی آئی کا اجلاس بھی منعقد ہوا تھا، جس میں فیصلہ کیا گیا تھا کہ چاروں صوبوں کے ایڈووکیٹ جنرل اور تکنیکی اسٹاف کو ذمہ داریاں تفویض کی جائیں تاکہ کسی صوبے کو کوئی اعتراض نہ ہو، اس سے متعلق بحث آئندہ اجلاس میں کی جائے گی۔