ایف پی سی سی آئی کے ہیڈ آفس کی کراچی سے اسلام منتقلی کی تجویز تاجر برادری اور معیشت کے خلاف سنگین سازش ہے۔ حنیف گوہر

ایسوسی ایشن آف بلڈرز اینڈ ڈیولپرز (آباد) کے سابق چیئرمین،ایف پی سی سی آئی کے سابق نائب صدر اور یونائیٹڈ بزنس گروپ کے رہنما محمد حنیف گوہر نے فیڈریشن آف پاکستان چیمبرآف کامرس اینڈ انڈسٹری(ایف پی سی سی آئی) کی جانب سے جاری کردہ ای سی،جی بی میٹنگ کے ایجنڈے میں شامل ایف پی سی سی آئی کے ہیڈ آفس کی کراچی سے اسلام منتقلی کی تجویز کو تاجر برادری اور معیشت کے خلاف سنگین سازش قرار دیا ہے۔ حنیف گوہر نے کہا کہ کراچی معاشی سرگرمیوں کا حب اور 70 فیصد ریونیو دینے والا شہر ہے۔ سب سے زیادہ ٹریڈ باڈیز کراچی میں ہیں۔ اسٹاک ایکسچنج، اسٹیٹ بینک اور دیگر تمام بینکوں کے صدر دفاتر، درآمدات وبرآمدات کے لیے بندرگاہیں کراچی میں ہونے کے باوجو اس طرح کی تجویز تاجروں و صنعتکاروں کے سب سے اہم ترین پلیٹ فارم کو ملک کی معاشی شہ رگ سے دور کرنے کی سازش ہے جس کے ملکی معیشت پر بھی سنگین منفی اثرات پڑیں گے۔ یہ صرف ذاتی مفاد اور سہولت کا فیصلہ ہے جو کہ جائز نہیں۔ حنیف گوہر نے کہا کہ یہ ادارہ گذشتہ 70 سال سے کام کر رہا ہے۔ ایف پی سی سی آئی کا برسراقتدار نااہل گروپ گزشتہ 4 ماہ سے لاک ڈاون کی وجہ سے معاشی بحران کا شکار تاجر برادری کو کوئی ریلیف نہ دلواسکا۔ ان کا کہنا تھا کہ ایف پی سی سی آئی کی موجودہ قیادت وفاقی اداروں سے تاجروں کے مسائل حل کرانے میں بری طرح ناکام رہی ہے اور اب تو یہ ادارے ہی تباہ کرنے کی سازشیں کر رہے ہیں۔ حنیف گوہر نے کہا کہ ملک کو سب سے زیادہ ریونیو دینے والا شہر کراچی کا انفرا اسٹرکچر تباہ حال ہے۔ لوڈ شیڈنگ اور مہنگی بجلی کے باعث کاروبار لاگت زیادہ ہونے سے صنعتیں بند ہورہی ہیں۔ لاک ڈاون نے تاجروں وصنعتکاروں کو مالی مشکلات سے دوچار کردیا ہے۔ حنیف گوہر نے ایف پی سی سی آئی کے صدر کا دوسالہ مدت کرنے کی تجویز کوبھی مسترد کرتے ہوئے کہاکہ اس طرح کا اقدام ایف پی سی سی آئی میں جمہوری روایت کو نقصان پہنچانا ہے۔ انھوں نے کہا کہ فیڈریشن کے صدر کی مدت ایک سال سے 2 سال کی گئی تو یو بی جی سخت مزاحمت کرے گا۔ ایف پی سی سی آئی عہدیداران کو چاہیے تھابزنس کمیونٹی کے مسائل کے حل کی کوششیں کرتے اور ایسے وقت میں فرنٹ پر آکر کراچی شہر کے انفرا اسٹرکچر کی بحالی اور تاجروں،صنعتکاروں کے مسائل حل کرانے کے لیے بھرپور کوششیں کرتے لیکن بجائے اس کے انھوں نے تاجروں کے سب سے بڑے پلیٹ فارم کو ہی کراچی سے اسلام آباد منتقلی کی تجویز دے دی جو ان کی تاجر دشمنی کا کھلا ثبوت ہے۔ حنیف گوہر نے کہا کہ ایف پی سی سی آئی کی انتطامیہ فیڈریشن کے صدر دفتر کی اسلام آباد منتقلی کوفی الفور ایجنڈے سے خارج کرے اور ٹریڈ آرگنائزیشن کے قوانین کے تحت جلد از جلد الیکشن شیڈول کا اجراء کرے۔ اِس کے برعکس ہونے والے فیصلوں کے خلاف سخت مزاحمت کی جائے گی۔
شکریہ
محمد حنیف گوہر
سابقہ چیئرمین (آباد)، سابقہ نائب صدر (ایف پی سی سی آئی)،
رہنما یونائیٹڈ بزنس گروپ (یوبی جی)،(9223676-0321)