معیشت کیلئےغیرمعمولی فیصلے کرنا ہوں گے : وزیراعظم

خزانے اور معیشت کے بارے میں تھنک ٹینک کے ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کوروناوائرس کے پاکستان سمیت دنیا بھرکی معیشت پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔ حکومت نے پہلے دن سے ہی پائیداراقتصادی سرگرمیوں اور وبائی مرض کورونا سے عوام کو تحفظ فراہم کرنے کے درمیان توازن برقراررکھنے کی حکمت عملی اختیارکی ۔ انہوں نے اس بات پرزوردیا کہ کوروناوائرس کی وباء کے باعث مشکل کی اس گھڑی میں ملک کی اقتصادی ترقی کے لئے غیرروایتی حل کی ضرورت ہے۔
اجلاس میں وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ، مشیر برائے ادارہ جاتی اصلاحات ڈاکٹر عشرت حسین، گورنر اسٹیٹ بینک رضا باقر اور سابق سیکریٹری خزانہ ڈاکٹر وقار مسعود خان بھی موجود تھے، مزید یہ کہ وزیراعظم کے مشیر برائے تجارت عبدالرزاق داؤد، شوکت ترین، سلطان الانا، ڈاکٹر اعجاز نبی اور عارف حبیب ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شریک ہوئے۔
اجلاس میں وزیراعظم نے کہا کہ تعمیرات اورہاؤسنگ کے شعبے کے لئے ایک حقیقت پرمبنی پیکج کااعلان کیاگیا ہے جس کامقصد اشدضروری روزگارکے مواقع پیدا کرنا اورمعاشی سرگرمیاں تیز کرنے سمیت غریب عوام کے لئے سستے گھروں کی تعدادمیں اضافہ کرناہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ حکومت کی متعدد جاری پالیسیوں اور منصوبوں پر تھنک ٹینک کا فیڈ بیک انہیں باقاعدگی سے فراہم کیا جانا چاہیے۔
عمران خان نے کہا کہ بنیادی ترجیح ٹارگٹڈ سبسڈیز کے ذریعے معاشرے کے غریب طبقے کو ریلیف فراہم کرنا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ غربت کے خاتمے کے لیے ‘احساس’، حکومت کا فلیگ شپ پروگرام ہے اور ضرورت مندوں تک پہنچنے کی حکمت عملی کے ساتھ اس کو وسیع کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے تھنک ٹینک کی جانب سے بینکنگ اور فنانس، احساس پروگرام میں مزید بہتری لانے، چھوٹے اور درمیانے کاروبار کو سہولیات کی فراہمی کے حوالے سے پیش کی جانے والی تجاویز کو سراہا۔
مشیرخزانہ ڈاکٹرعبدالحفیظ شیخ نے اجلاس کو خزانہ اورمعیشت کے بارے میں تھنک ٹینک کے اغراض ومقاصدکے بارے میں بریفنگ دی

Courtesy Gnn News