میگا کرپشن کیسز کو منطقی انجام تک پہنچانا اولین ترجیح ، چیئرمین نیب

چیئرمین نیب(قومی احتساب بیورو) جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کرپشن کا خاتمہ اور میگا کرپشن مقدمات کو منطقی انجام تک پہنچانا نیب کی اولین ترجیح ہے ۔ احتساب بیورو نے اپنے قیام سے اب تک 466.069 ارب روپے بدعنوان عناصرسے وصول کر کے قومی خزانہ میں جمع کرائے ہیں ۔ نیب کی توجہ بدعنوانی جیسے منی لانڈرنگ ، بڑے پیمانے پر عوام سے دھوکا دہی کے واقعات ، بینک فراڈ ، جان بوجھ کر بینک قرض نادہندگی، اختیارات کا غلط استعمال اور سرکاری فنڈز کے غبن پر مرکوزہے ۔ان خیالات کا ا ظہار انہوں نے نیب کی مجموعی کار کردگی سے متعلق جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا بدعنوانی تمام برائیوں کی جڑ ہے ۔ احتساب بیورو کو 2019میں مجموعی طور پر 53643شکایات موصول ہوئیں جن میں سے 42760پراسس کی گئیں جبکہ 2018میں 48591شکایات موصول ہوئیں جن میں سے 4141کو نمٹایا گیا۔ نیب کو شکایات کی تعدا دمیں اضافہ اس پر اعتماد کا اظہار ہے ۔مجموعی طور پر سزا کا تناسب تقریباً 68.8 فیصد ہے جو دنیا میں وائٹ کالر کرائم کی تحقیقات میں نمایاں کامیابی ہے ۔ادارے کے سینئر افسروں نے اجتماعی دانش سے فائدہ اٹھانے کیلئے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کا نظام وضع کیا ہے ۔ نیب سارک اینٹی کرپشن فورم کا چیئرمین ہے ۔ احتساب بیورو کو سارک ممالک میں ایک رول ماڈل سمجھا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا چین نے پاکستان میں سی پیک کے تحت جاری منصوبوں کی نگرانی کیلئے مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کیے ہیں۔

Coutersy Duniya News